گٹکا اور مین پوری کھلے عام فروخت، قانونی ادارے خاموش

August 27, 2015 5:23 pm0 commentsViews: 29

بیشتر علاقوں میں گھروں کے اندر قائم کارخانوں میں گٹکے اور مین پوری تیار کی جارہی ہے
حکومت سندھ کی جانب سے پابندی عائد، پولیس کی سرپرستی میں گٹکے کے کارخانے چل رہے ہیں
کراچی( اسٹاف رپورٹر) حکومت سندھ کی جانب سے گٹکے اور مین پوری کی تیاری و فروخت پر پابندی عائد ہے لیکن عملدرآمد کے فقدان کے باعث شہر میں کھلے عام مختلف اقسام کے گٹکے اور مین پوری کی فروخت جاری ہے‘ مین پوری اور گٹکے کے استعمال سے نہ صرف شہر میں گندگی پھیل رہی ہے بلکہ نوجوانوںکی بڑی تعداد بھی منہ اور گلے کے کینسر میں مبتلا ہورہی ہے‘ سندھ حکومت نے مین پوری‘ پان و گٹکے کے حوالے سے قانون سازی بھی کی جس کی روشنی میں شہر میں مین پوری چھالیہ اور گٹکے کی فروخت پر پابندی لگائی گئی ہے لیکن قانون پر عملدرآمد کا فقدان نظر آرہا ہے پولیس کی سرپرستی میں شہر کے بیشتر علاقوںمیں گھروں میں قائم کارخانوں میں گٹکا‘ مین پوری اور دیگر مضر صحت اشیاء بنائی جاتی ہیں۔ لانڈھی‘ کورنگی‘ محمود آباد‘ لیاقت ‘اورنگی ٹائون‘ رنچھوڑ لائن ‘صدر‘ طارق روڈ‘ قیوم آباد‘ ملیر سمیت شہر کے بیشتر مقامات پر گٹکے اور مین پوری کی کھلے عام فروخت جاری ہے۔

Tags: