ڈالر کا بحران پیدا کرنے پر تجارتی بینکوں کو نوٹس تحقیقاتی کمیٹی قائم

August 27, 2015 5:26 pm0 commentsViews: 22

اسٹیٹ بینک نے صرف ایک دن میں کروڑوں روپے کے جعلی لیٹر آف کریڈٹ کھولنے کے بارے میں رپورٹ طلب کرلی
بینکوں نے سٹے بازی کے ذریعے بڑے پیمانے پر خریداری کرکے ڈالر کی قیمت بڑھا کر 105 روپے کی سطح پر پہنچادیا
کراچی( نیوز ڈیسک) اسٹیٹ بینک آف پاکستان نے ڈالر کا بحران پیدا کرنے والے24 تجارتی بینکوں کو نوٹس جاری کردیئے ہیں‘ اسٹیٹ بینک نے 24 اگست کو صرف ایک دن میں کروڑوں روپے کے جعلی لیٹر آف کریڈ( ایل سی) کھولنے کے بارے میں رپورٹ طلب کرتے ہوئے تحقیقاتی کمیٹی قائم کردی ہے‘ ذرائع کے مطابق24 اگست کو کمرشل بینکوں نے سٹے بازی کے ذریعے ڈالر کی اتنی خریداری کی کہ ڈالر کی قیمت 2.10 روپے اضافے کے بعد ڈالر 105 روپے کی سطح پر پہنچ گیا‘ لیکن اسٹیٹ بینک کے گورنر اشرف محمود وتھرا نے بروقت اقدامات کرتے ہوئے تجارتی بینکوں کا اجلاس طلب کیا جس کے نتیجے میں بدھ کو ڈالر کی قیمت104.65 روپے ہوگئی جبکہ انٹر بینک میں ڈالر کی قیمت 104.10 روپے ہوگئی‘ واضح رہے کہ 24بینکوں میں تمام بڑے ملکی اور غیر ملکی بینک شامل ہیں۔ ذرائع کے مطابق 2013 ء میں بھی ایسا ہوا تھا جب ڈالر کی قیمت میں صرف ایک دن میں9 روپے کا اضافہ کردیا گیا تھا جس کی وجہ سے ڈالر 105 روپے سے بڑھ کر 114 روپے ہوگیا۔ان بینکوں نے24اگست2015 کو دوبارہ وہی پرانا طریقہ کار اختیار کیا ہے۔

Tags: