ڈاکٹر عاصم کے بعد امین فہیم اور گیلانی کی گرفتاری کا حکم پیپلزپارٹی نے احتجاج کیلئے حکمت عملی تیار کرلی

August 28, 2015 4:21 pm0 commentsViews: 26

وفاقی اینٹی کرپشن عدالت نے امین فہیم اور یوسف رضاگیلانی کو گرفتار کرکے 10ستمبر تک پیش کرنے کا حکم دیا ہے، ٹڈاپ کرپشن سمیت مزید12نئے مقدمات کے حتمی چالان پیش کردیے گئے
پیپلزپارٹی کو دیوار سے لگایاجارہا ہے، جیلیں اور ہتھکڑیاں ہمارا راستہ نہیں روک سکتیں، آصف زرداری، سیکورٹی اداروں نے زرداری پر ہاتھ ڈالا تو جنگ ہوگی، خورشید شاہ
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) سابق صدر آصف علی زرداری کے دست راست سابق وفاقی وزیر پیٹرولیم ڈاکٹر عاصم حسین کی گرفتاری کے بعد پیپلز پارٹی کے گرد گھیرا تنگ ہونے لگا‘ پیپلزپارٹی سندھ کی اہم شخصیات اور بعض موجودہ سابق صوبائی وزراء کیخلاف تحقیقات شروع کردی گئی اور مذکورہ وزارتوں سے اہم ریکارڈ حاصل کرلیا گیا‘ ڈاکٹر عاصم حسین سے ہونیوالی تفتیش کے بعد مزید اہم شخصیات کی گرفتاریوں کا امکان ہے‘ وفاقی اینٹی کرپشن کورٹ کے جج محمد عظیم کی عدالت نے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی اور پیپلز پارٹی کے مرکزی رہنما مخدوم امین فہیم کو ٹڈاپ کرپشن کیس میں گرفتار کرکے10 ستمبر تک پیش کرنے کا حکم دیا ہے‘ وفاقی تحقیقاتی ادارے (ایف آئی اے)نے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی اور امین فہیم اور دیگر ساتھیوں کیخلاف ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی پاکستان( ٹڈاپ) میںکرپشن سے متعلق تفتیش مکمل کرتے ہوئے مزید 12 نئے مقدمات کے حتمی چالان عدالت میں پیش کردیئے‘ ایف آئی اے کی جانب سے پیش کئے گئے حتمی چالان میں پیپلز پارٹی کے دونوں رہنمائوں سمیت دیگر کو مفرور قرار دیا جس پر عدالت نے سابق وزیراعظم یوسف رضا گیلانی اور امین فہیم سمیت دیگر کو 10 ستمبر تک گرفتار کرکے پیش کرنے کا حکم دیا اور چالان منظور کرلیا۔علاوہ ازیں پاکستان پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین آصف علی زرداری نے پارٹی قائدین و رہنمائوں کی گرفتاریوں کیخلاف بھرپور احتجاج اور ٹھوس حکمت عملی اپنانے کی ہدایت کردی ہے‘ تفصیلات کے مطابق آصف علی زرداری نے جمعرات کو پارٹی قائدین سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اور اس دوران انہوں نے کہا کہ رہنمائوں کی گرفتاریوں کیخلاف بھر پور احتجاج اور ٹھوس حکمت عملی اپنانے کی ہدایت کردی ہے‘ آصف علی زرداری نے جمعرات کو پارٹی قائدین سے ٹیلی فونک رابطہ کیا اس دوران انہوں نے کہا کہ رہنمائوں کے کیخلاف احتجاج کیا جائے اور ٹھوس حکمت عملی اپنائی جائے‘ پیپلز پارٹی کو دیوار سے لگایا جارہا ہے‘ جیلیں اور ہتھکڑیاں ہمارا راستہ نہیں روک سکتیں‘ آصف زرداری کا کہنا تھا کہ کیا کرپشن صرف سندھ میں ہورہی ہے؟ ڈاکٹر عاصم کا قصور صرف اتنا ہے کہ ان کا تعلق پیپلز پارٹی سے ہے‘ دوسری طرف قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ آصف زرداری پر ہاتھ ڈالا گیا تو جنگ کی ابتداء ہوجائیگی‘ انہوں نے جمعرات کو پارلیمنٹ ہائوس میں بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اگر آصف زرداری پر ہاتھ ڈالا گیا تو پیپلز پارٹی کے ساتھ جنگ کے مترادف ہوگا‘ سیاسی جماعتیں جمہوری حکومت کی دست و بازو ہیں سندھ کیخلاف انتقامی کارروائیاں کی جارہی ہیں حکومت کو اتنا کمزور نہیں ہونا چاہئے‘ پیپلز پارٹی کے رہنمائوں پر اگر الزامات ہیں تو وزیراعظم پیپلز پارٹی کے ساتھ بیٹھیں‘ اداروں اور ایجنسیوں کو بھی بلایا جائے سب بیٹھیں‘ ہمارے وکیل بھی ساتھ ہوں گے‘ الزامات کو ثابت کیا جائے‘ سیاسی رہنمائوں کو نشانہ بنانے کے معاملے پر وزیراعظم نواز شریف‘ اسحاق ڈار سامنے آئیں کیوں کہ زیادہ حرف ان دونوں شخصیات پر آرہا ہے‘ ریاست کی خاطر پیپلزپارٹی نے اینٹی اسٹیبلشمنٹ پالیسی میں یو ٹرن لیا ہے‘ ریاست کو انتشار کی طر ف نہ دھکیلا جائے بندوق کے زور پر کچھ نہیں ہوسکتا‘ پکڑ دھکڑ بند ہونا چاہئے۔

Tags: