آج صبح نادرن بائی پاس پر مقابلے میں 2اغواء کار ہلاک قبرستان سے اسلحہ برآمد

August 28, 2015 4:22 pm0 commentsViews: 1062

پولیس نے اغواء کاروں کی موجودگی کی اطلاع پر بجار گوٹھ پر چھاپہ مارا تھا، جہاں ملزمان سے مقابلہ شروع ہوگیا، دوطرفہ فائرنگ کے تبادلے کے بعد بینک کے مغوی نائب صدر کو بازیاب کرالیا گیا
حساس ادارے اور پولیس نے زیرحراست ملزم کی نشاندہی پر کھجی گرائونڈ کے قریب واقع قبرستان میں بھاری تعداد میں اسلحہ برآمد کرلیا جو سانحہ 12مئی میں استعمال ہوا تھا، ملزم عباسی اسپتال میں اسسٹنٹ اکائونٹ افسر ہے، اس کے مزید ساتھیوں کو بھی پوچھ گچھ کے لیے حراست میں لے لیا گیا
پولیس کے اسپیشل انویسٹی گیشن یونٹ نے مغوی اور اغواء کاروں کی موجودگی کی اطلاع پر کارروائی کی تھی، ملزمان نے بیک کے نائب صدر کو اغواء کرکے اس کی رہائی کے لیے 10کروڑ روپے تاوان طلب کیا تھا، پولیس نے ٹیلی فون کالز کی مدد سے ملزمان کے ٹھکانے کا سراغ لگالیا، مرنے والے اغواء کاروں کی شناخت نہیں ہوسکی
کراچی( کرائم رپورٹر) صبح سویرے اسپیشل انویسٹی گیشن یونٹ پولیس کی ناردرن بائی پاس پر کارروائی‘ پولیس مقابلہ‘2 اغواء کار مارے گئے‘ نجی بینک کا نائب صدر بازیاب‘ ملزمان نے10کروڑ روپے تاوان مانگا تھا‘ تفصیلات کے مطابق آج صبح اسپیشل انویسٹی گیشن یونٹ پولیس نے سپر ہائی وے ناردرن بائی پاس پر بجار بگٹی گوٹھ میں چھاپہ مارا تو وہاں موجود اغواء کاروں نے پولیس کو دیکھتے ہی فائرنگ شروع کردی‘ پولیس کی جانب سے بھی جوابی فائرنگ کی گئی‘ فائرنگ کا سلسلہ آدھے گھنٹے جاری رہا جس کے باعث علاقہ گولیوں کی تڑتڑاہٹ سے گونج اٹھا اور علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ دوطرفہ فائرنگ کے نتیجے میں2 اغواء کار مارے گئے جبکہ پولیس نے زنجیروں میں جکڑے مغوی غوث احمد کو بازیاب کروالیا‘ ایس ایس پی ایس آئی یو فاروق اعوان کے مطابق مغوی غوث احمد میزان بینک کا نائب صدر ہے اور اس سائٹ کے علاقے سے14 اگست کو اغواء کیا تھا‘ غوث احمد کی رہائی کیلئے اغواء کاروں نے 10کروڑ روپے تاوان طلب کیا تھا‘ پولیس نے بتایا کہ تاوان کی کال رحیم یار خان سے کی جارہی تھی‘ پولیس نے ہونیوالی کالز کو ٹریس کرتے ہوئے اغواء کاروں کا ٹھکانہ معلوم کیا‘ پولیس کا کہنا ہے کہ ملزمان کے قبضے سے2 ٹی ٹی پستول برآمد ہوئی ہے اور مقابلے کے دوران مارے جانیوالے اغواء کاروں شناخت نہیں ہوسکی ہے اور نہ ہی یہ معلوم ہوسکا ہے کہ انکا تعلق کس جماعت ہے جبکہ اغواء کاروں کے مزید ساتھیوں کی تلاش جاری ہے۔صبح سویرے حساس ادارے اور پولیس کا زیر حراست ملزم کی نشاندہی پر عباسی شہید اسپتال کے قریب قبرستان سے چھپایا گیا بھاری مقدار میں اسلحہ بر آمد، تفصیلات کے مطابق آج صبح حساس ادارے اور پولیس نے زیر حراست ملزم فرید الدین کی نشاندہی پر ناظم آباد کچھی گرائونڈ کے قریب قبرستان سے دفن شدہ بھاری مقدار میں اسلحہ بر آمد کرلیا۔ فرید الدین عباسی شہید اسپتال کا اسسٹنٹ اکائونٹ آفیسر تھا۔ ملزم کو پولیس اور حساس اداروں نے حراست میں لئے کر عدالت سے90 دن کا جسمانی ریمانڈ لیا تھا۔ جس کے بعد ملزم فرید الدین نے انکشاف کیا کہ اس نے اپنے ایک دوست رجب کے ساتھ مل کر کچھ عرصہ قبل قبرستان میں اسلحہ دفن کیا تھا۔ ملزم فرید الدین کا تعلق سیاسی جماعت کی میڈیکل کمیٹی سے تھا۔ ملزم کی تعلیمی اسناد بھی جعلی ہیں اور ملزم پر بھتہ خوری اور خواتین عملے کو ٹرانسفر پوسٹنگ کا جھانسہ دے کر رقم بٹورنے کا الزام ہے۔ با خبر ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ اسلحہ میں 4 کلاشنکوف ، 3 رپیٹر، 5 نائن ایم ایم پستول، 4 30 بور ، 2منی رائفل سمیت بھاری مقدار میں اسلحہ اور لا تعداد گولیاں بر آمد ہوئی ہیں۔ جو کہ سانحہ 12میں استعمال ہوا تھا اور ملزم کی نشاندہی پر3 افراد کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔

Tags: