کراچی میں را کے 4 دہشتگرد گرفتار‘ بم دھماکوں کا منصوبہ ناکام

August 28, 2015 4:46 pm0 commentsViews: 25

ملزمان نے پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کو سبوتاژ کرنے کی منصوبہ بندی کررکھی تھی‘ تعلق سیاسی جماعت سے ہے
شہر میں فرقہ وارانہ کشیدگی پھیلانے کا ٹاسک دیا گیاتھا‘ پاکستان میں را کے 300 ایجنٹ سرگرم ہیں‘ دہشت گردوں کا انکشاف
کراچی( اسٹاف رپورٹر) کائونٹر ٹیررازم ڈیپارٹمنٹ اور خفیہ ادارے نے مشترکہ کارروائی کرتے ہوئے پاک چین راہداری منصوبے کو سبو تاژ کرنے کی منصوبہ بندی کرنے والے بھارتی خفیہ ایجنسی ’’ را‘‘ سے تعلق رکھنے والے 4 دہشت گردوں کو گرفتار کرلیا، ملزمان نے محرم میں دھماکے کرنے کا منصوبہ بھی بنا رکھا تھا۔ ملزمان کا تعلق ایک سیاسی جماعت سے ہے۔ انویسٹی گیشن سی ٹی ڈی کے ایس ایس پی نوید احمد خواجہ نے جمعرات کو سی ٹی ڈی سول لائن میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ سی ٹی ڈی اور ایک خفیہ ادارے نے مشترکہ کارروائی کے دوران چار ملزمان عبدالجبار عرف ظفر ٹینشن، محمد شفیق خان عرف پپو محمد محسن خان عرف کاشف اور خالد امن عرف ڈیڈ کو گرفتار کرلیا۔ ملزمان نے1995ء سے2002ء تک بھارتی علاقوں فرید پور، راجستھان، بسنت پور، ڈیرہ دھن اور جودھپور ، میں ’’ را‘‘ کے زیر تربیت ٹریننگ حاصل کی اور بھارتی فوج کے افسران میجر بھگت اور میجر راٹھور نے ان کی تربیت کی، ملزم عبدالجبار عرف ٹینشن نے تفتیش کے دوران بتایا کہ بھارت میں جاوید لنگڑا انہیں لاجسٹک سپورٹ فراہم کرتا تھا۔ جاوید لنگڑا نے پاکستان واپس جانے کی ہدایت کی، ظفر ٹینشن نے مزید بتایا ہے کہ اس نے دو کلو دھماکہ خیز مواد ساتھ رکھ کر اجمل پہاڑی اور نورا نامی شخص کے ساتھ پاکستان کی سرحد عبور کی اور اس کے چار دن بعد اس نے مہاجر قومی موومنٹ کے رہنما آفاق احمد پر اجمل پہاڑی، ارشد چھوٹا، ، صفدر، ذیشان اور نورا کے ساتھ ملکر حملہ کیا جس میں وہ محفوظ رہے۔ ملزمان نے دوران تفتیش انکشاف کیا ہے کہ آنے والے 9 اور 10 محرم کو انہوں نے انچولی، رضویہ اور شاہ خراسان امام بارگاہوں میں دھماکوں کا منصوبہ بنا رکھا تھا تا کہ شہر میں فرقہ وارانہ کشیدگی پھیلائی جائے۔ ملزم محسن نے بھارت سے دو سالہ تربیت کے بعد مختلف سیاسی رہنمائوں، پولیس افسران اور قومی و صوبائی اسمبلی کے ممبران کو قتل کرنے کی منصوبہ بندی کی ملزمان نے2008ء میں اورنگی ٹائون میں پے درپے 6 دھماکے کئے جن میں3 افراد جاں بحق اور 25 سے زائد زخمی ہوئے تھے۔ ملزمان کے جنوبی افریقہ، سنگا پور ، ملائیشیا، لندن اور دبئی میں موجود جرائم پیشہ گروپس سے رابطے ہیں۔ ایس ایس پی کے مطابق ملزمان نے انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں ’’را‘‘ کے300 کے قریب سلیپر سیل ہیں۔

Tags: