کاغذی بازار میں بھتہ نہ دینے پر گینگ وار ملزمان کی دکان پر فائرنگ

September 1, 2015 2:20 pm0 commentsViews: 20

موٹرسائیکل سوار گینگ وار کاندوں کی فائرنگ سے دکاندار کا بھانجا اور گاہک گولیاں لگنے سے زخمی ہوگیا
واقعہ کے بعد مارکیٹ میں بھگدڑ مچ گئی، تاجروں کادکانیں بند کرکے پولیس کے خلاف احتجاج
پولیس کی جانب سے ملزمان کی جلد گرفتاری کی یقین دہانی کے بعد تاجروںنے احتجاج ختم کردیا
کراچی (کرائم رپورٹر) کھارادر کاغذی بازار میں بھتہ کی رقوم نہ دینے پر لیاری گینگ وارکے کارندوں نے دکان پر فائرنگ کرکے دوافراد کو زخمی کردیا ،مشتعل تاجروںنے مارکیٹ بند کرکے پولیس کے خلاف احتجاج کیا ،شہر میں فائرنگ کے دیگر واقعات میں 5افراد زخمی ہوگئے ۔کھارادر کے علاقے کاغذی بازار میںشاہین لیس نامی دکان کے باہرموٹرسائیکل سوار لیاری گینگ وار کے کارندوں نے اندھا دھند فائرنگ کی جس کے نتیجے میں دکان کے مالک کا بھانجہ محمدارسلان ولد الطاف اور کسٹمر شہروز ولد غلام رسول میمن زخمی ہوگئے جن کو فوری طور پر سول اسپتال منتقل کیا گیا ،جبکہ واقعہ کے وقت مارکیٹ میں بھگدڑ مچ گئی اور خوف وہراس پھیل گیا ،اس اطلاع پر رینجرزاور پولیس کی بھاری نفری جائے وقوعہ پر پہنچ گئی،پولیس کے مطابق ارسلان کے گردن میں گولی لگی ہے جس سے اسکی حالت تشویشناک ہے۔ واقعے کے بعد مارکیٹ کے دکانداروں نے دکانیں بند کر کے احتجاجی مظاہرہ شروع کیا اور مارکیٹ کے دکاندرا سڑکوں پر آگئے دکانداروں کا کہنا تھا کہ صرافہ بازار میں بھی اسی طرح سے بھتہ خوری کے معاملے پر دوافراد کو نشانہ بنایا گیا تھا ، لیاری گینگ وار کے کارندوں کی جانب سے پھر سے بھتے کا مطالبہ کیا گیا تھا اور نہ دینے پر فائرنگ کا نشانہ بنایا گیا ،تاہم پولیس افسران نے مشتعل تاجروں کو یقین دلوایا کہ پولیس جلد سے جلد ملزمان کو گرفتار لے گی اور پولیس نے متعدد گینگ وار کے کارندوں کو ہلاک اور گرفتار کرچکی ہے انہیں بھی جلد گرفتار کرلیا جائے گا ،مشتعل تاجر وں نے پولیس کی یقین دہانی پر احتجا ج ختم کردیا ، ایس ایچ او سب انسپکٹر اکبر کا کہنا ہے کہ واقعے میں دکاندار کا بھانجہ زخمی ہوا ہے اور پولیس کو اس سے قبل کوئی بھتہ خوری سے متعلق درخواست یا اطلاع نہیں دی گئی تھی اس حوالے سے جانچ کی جارہی ہے۔

Tags: