پاکستان پر غیر ملکی قرضے 163 ارب ڈالر سے تجاوز کرگئے

September 1, 2015 2:27 pm0 commentsViews: 54

ٹیکس نیٹ میں اضافہ نہ ہوسکا‘ جی ڈی پی کی شرح 9.4 فیصد رہی‘ بجلی کے شارٹ فال کا سامنا
قومی آمدنی میں 15 ارب ڈالر سالانہ کا خسارہ‘ آئی ایم ایف کے پروگرام پر عمل در آمد ناگزیر ہوگیا
کراچی( کامرس رپورٹر) پاکستان پر غیر ملکی قرضوں کا بوجھ 163 ارب ڈالر سے تجاوز کرگیا‘ حکومت کی جانب سے متعدد منصوبوں پر عمل درآمد کے باوجود ٹیکس نیٹ میں اضافہ خام خیالی رہ گیا‘ پاکستان میں جی ڈی پی کی شرح9.4 فیصد دنیا میں سب سے کم ہے۔ برطانیہ کے انٹرنیشنل سروے ڈپارٹمنٹ کے حالیہ جائزے کے مطابق پاکستانی معیشت کا کل حجم323 ڈالر ہے جس میں محصول ہونیوالی آمدنی کا 44 فیصد صرف سود کی ادائیگی میں چلا جاتا ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کی68 فیصد ٹیکس آمدنی ڈائریکٹ ٹیکسوں کی مرہون منت ہے۔ جو پاکستانی حکومت پیٹرول‘ ڈیزل ‘ گیس‘ بجلی اور خوردنی اشیاء پر لگائے گئے ٹیکسوں سے حاصل کرتی ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ پاکستان کو مجموعی طور پر 4000 میگا واٹ بجلی کے شارٹ فال کا سامنا ہے جس کے باعث مجموعی قومی آمدنی میں15ارب ڈالر سالانہ کا خسارہ ہورہا ہے۔ جبکہ پاکستان کو معاشی اور اقتصادی خسارے کو پورا کرنے کیلئے6.8 ارب ڈالر کے آئی ایم ایف کے پروگرام پر عمل کرنا ناگزیر ہوگیا ہے۔ ملک میں توانائی کے بحران کے باعث بیروزگاری میں22 فیصد اضافہ ہوچکا ہے جبکہ غیر مستحکم سیاسی صورتحال کے باعث بیرون ملک سرمایہ کاروں کی پاکستان آمد بھی انتہائی سست روی کا شکار ہے۔

Tags: