آئل ٹینکرز کی ہڑتال پیٹرول اور ڈیزل غائب‘ عوام پریشان آج صبح ہڑتال ختم سپلائی بحال

September 2, 2015 4:15 pm0 commentsViews: 47

کراچی کے پیٹرول پمپس پر گاڑیوں کی طویل قطاریں لگ گئیں‘ شہریوں کو معمول کے کام نمٹانے میں دشواریوں کا سامنا
وفاقی حکومت کی جانب سے عائد کردہ 16 فیصد ٹرانسپورٹیشن سروسز ٹیکس کا نفاذ مؤخر کرنے پر ہڑتال ختم کردی ہے‘ آئل ٹینکرز ایسوسی ایشن
اسلام آباد، لاہور، کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک، خبر ایجنسیاں) آئل ٹینکر مالکان کی ہڑتال کے باعث مختلف شہروں میں پیٹرول کی قلت رہی، شہری طویل قطاروں میں لگ کر خوار ہوتے رہے۔ بعد ازاں آئل ٹینکر مالکان نے حکومت سے مذاکرات کامیاب ہونے کے بعد ہڑتال ختم کر دی اور پیٹرولیم مصنوعات کی ترسیل بحال کر دی گئی، سروسز ٹیکس کا نفاذ دسمبر تک موخر کر دیا گیا۔ پیٹرول کی فراہمی کم ہونے سے پیٹرول کے حصول کے لئے پمپس پر گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کی لمبی قطاریں لگی رہیں۔ ماضی کے بحران کے باعث پیٹرول کی قلت کے خوف سے شہری بوتلوں اور کینز میں بھی پیٹرول بھرواتے رہے۔ کراچی کے90 فیصد سے زائد پمپوں پر پیٹرول دستیاب نہ ہونے کی وجہ سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔ اسلام آباد، راولپنڈی، فیصل آباد، حیدر آباد، سکھر، میر پور خاص، کوئٹہ اور دیگر شہروں میں بھی پیٹرول کی قلت رہی۔ آئل ٹینکرز کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن کے صدر سلیمان ترین نے بتایا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے ٹرانسپورٹیشن سروسز ٹیکس16 فیصد عائد کیا گیا ہے جو آئل ٹینکر ز مالکان کیلئے نا قابل قبول ہے۔ ہمارا حکومت سے بدستور یہ مطالبہ ہے کہ سروسز ٹیکس کومکمل ختم کیا جائے تاہم حکومت کی جانب سے ٹیکس کا نفاذ دسمبر تک موخر کئے جانے کے بعد ایسوسی ایشن نے بھی ہڑتال ختم کر دی ہے۔ سیکریٹری پیٹرولیم راشد مرزا نے ایک بیان میں کہا کہ ملک میں پیٹرولیم مصنوعات بالخصوص پیٹرول اور ڈیزل کا وافر اسٹاک موجود ہے۔ اس وقت2لاکھ میٹرک ٹن پیٹرول موجود ہے جو اگلے13 دنوں کی ضروریات پوری کرنے کیلئے کافی ہے۔ آئندہ37 دنوں کیلئے7 لاکھ 51 ہزار میٹرک ٹن ڈیزل بھی دستیاب ہے۔

Tags: