ٹریفک پولیس اہلکاروں پر دہشت گرد حملے حساس علاقوں میں مغرب کے بعد چوکیاں بند رکھنے کا فیصلہ

September 4, 2015 7:03 pm0 commentsViews: 22

دہشت گردوں نے نیا طریقہ دریافت کرلیا، حساس علاقوں میں ٹریفک پولیس اہلکاروں پر مزید مسلح حملوں کی منصوبہ بندی کی گئی ہے، حساس اداروں کی رپورٹ
دہشت گردوں کی جانب سے شہر میں ٹریفک پولیس اہلکاروں پر ہونے والے پے در پے حملوں کے بعد حساس علاقوں میں ٹریفک پولیس کی چوکیوں کو بند اور ان علاقوں میں ٹریفک پولیس اہلکاروں کو کام کرنے سے روک دیا گیا
اورنگی ٹائون، کورنگی، پیر آباد، قیوم آباد اور دیگر علاقوں میں ٹریفک اہلکاروں نے پولیس اور رینجرز سے تحفظ فراہم کرنے کی اپیل کردی، اپنی حفاظت خود کرنے کے لیے ٹریفک اہلکاروں کو اسلحہ چلانے کی تربیت دی جارہی ہے
کراچی میں امن و امان کی صورتحال بہتر ہوتی ہے تو دہشت گرد بزدلانہ کارروائیوں پر اتر آئے ہیں، کراچی آپریشن میں پولیس اہلکاروں نے بہت خدمات انجام دی ہیں، ٹریفک اہلکاروں کو احتیاط کرنے کا کہا گیا ہے، ایڈیشنل آئی جی
کراچی( کرائم ڈیسک) دہشت گردوںنے حساس علاقوں میں مزید ٹریفک پولیس اہلکاورں کو نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کرلی‘ حسا س اداروں کی رپورٹ کے بعد حساس علاقوں میں ٹریفک پولیس اہلکاروں کو کام کرنے سے روک دیا‘ جبکہ ٹریفک اہلکاروں کی حفاظت کیلئے حساس علاقوں میں مغرب کے بعد چوکیاں بند رکھنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔ ٹریفک اہلکاروں کو پہلی بار مسلح کیا گیا جبکہ بلٹ پروف جیکٹس بھی فراہم کی گیئں لیکن بدھ کو گلبائی میں ٹریفک اہلکاروں پر حملہ کیا گیا جس میں ایک اہلکار جاں بحق اور دو زخمی ہوگئے تھے‘ ٹریفک اہلکاروں پر حملوں کے بعد حساس علاقوں میں چوکیاں خالی کردی گئی تھیں جس کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ ٹریفک اہلکار حساس علاقوںمیں مغرب تک ڈیوٹی ادا کریں گے‘ دوسری جانب اورنگی ٹائون‘ کورنگی‘ پیر آباد‘ قیوم آباد رینجرز اور پولیس سے ٹریفک پولیس اہلکاورں کیلئے تحفظ کی اپیل کی گئی ہے‘ ٹریفک اہلکاروں کو اپنی حفاظت خود کرنے کے قابل بنانے کیلئے اسلحہ چلانے کی تربیت بھی شروع کی جارہی ہے۔ٹریفک پولیس کے اہلکاروں پر ہونے والے پے در پے حملوں کے پیش نظر شہر کے حساس علاقوں میں ٹریفک پولیس کی چوکیوں اور ان علاقوں میں ٹریفک پولیس اہلکاروں کو کام کرنے سے روک دیا گیا، جبکہ ویسٹ کے علاوہ شہر کے دیگر اضلاع کے چند پوائنٹس پر بھی ٹریفک آپریشن کو محدود کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا۔ ٹریفک پولیس افسر کا کہنا ہے کہ جو بھی موومنٹ ہوگی وہ پولیس پروٹوکول میں ہوگی ۔ ٹریفک پولیس حکام کی جانب سے شہر بھر میں ٹریفک کے لیے کام کرنے والے افسران و اہلکاروں کو مراسلے کے ذریعے کہا ہے کہ چند دنوں کے دوران ہونے والے ٹریفک پولیس اہلکاروں کی کلنگ کے پیش نظر یہ فیصلہ کیا گیا ہے شہر کے حساس علاقوں میں قائم ٹریفک سیکشن کو تا حکم ثانی بند کردیا جائے اورٹریفک پولیس کے اہلکار اپنے متعلقہ ٹریفک سیکشن میں موجود تو ہونگے تاہم وہ فیلڈ کی ڈیوٹی سر انجام نہیں دیں گے۔ مراسلے میں جن علاقوں کو حساس قرار دیا گیا ہے ان میں منگھوپیر، اورنگی ٹائون اور پیر آباد کے علاقے شامل ہیں ۔ اس سلسلے میں ایڈیشنل آئی جی کراچی مشتاق مہر سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ آپریشن پولیس کی جانب سے چوکیاں بند کرنے کی کوئی ہدایت نہیں دی گئی ہے تاہم یہ ضرور کہا گیا ہے کہ احتیاط ضرور کریں کیونکہ کراچی آپریشن میں پولیس نے بہت خدمات دی ہیں اور اب کراچی میں امن کی صورتحال بہتر ہورہی ہے تو ملزمان اپنی بزدلانہ کارروائیوں پر اتر آئے ہیں۔

Tags: