پابندی کے باجودغیرقانونی مویشی منڈیاں لگنا شروع

September 7, 2015 3:26 pm0 commentsViews: 112

نارتھ کراچی، کھارادر، لانڈھی، کورنگی اور سائٹ سمیت دیگر علاقوں میں غیرقانونی منڈیاں لگ رہی ہیں
سہراب گوٹھ، ملیر سمیت دیگر مویشی منڈیوں میں جانور گزشتہ سال کے مقابلے میں خاصامہنگا فروخت
کراچی( کامرس رپورٹر) کمشنر کراچی کی جانب سے غیر قانونی مویشی منڈی پر واضح پابندی کے باوجود شہر کے مختلف علاقوں میں غیر قانونی مویشی منڈیاں، قائم کیٹل فارم انڈسٹری نے قربانی کے جانور کلو اور من کے حساب سے فروخت کے منصوبے پر عملدر آمد شروع کر دیا۔ سہراب گوٹھ کی مرکزی مویشی منڈی 6لاکھ سے زائد قربانی کے جانوروں کی آمد کے باوجود ونڈو شاپنگ کا سلسلہ جاری ہے۔ تفصیلات کے مطابق ایشیا کی سب سے بڑی منڈی میں جانوروں کے ریٹ گزشتہ سال کے مقابلے میں30 سے 70 فیصد سے زائد وصول کئے جا رہے ہیں۔ مویشی کے تاجروں کا کہنا ہے کہ منڈی انتظامیہ نے ان سے جانور رکھنے کیلئے زمین کی فراہمی پر 20سے30 ہزار روپے وصول کئے جبکہ ایک کنستر پانی 15 روپے اور بڑا کین 35 روپے میں مل رہا ہے بڑے جانور منڈی میں اتارنے کیلئے ان سے فی کس1000 روپے وصول کیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ بجلی کے استعمال پر بھی فی یونٹ20 روپے وصول کئے جاتے ہیں۔ دوسری منڈی میں جانوروں پر فی جانور سے دو تین ہزار روپے کا خرچہ آتا ہے۔ کراچی میں سہراب گوٹھ کے علاوہ ملیر اور مواچھ گوٹھ، بکرا پیڑی کی4 غیر قانونی منڈیوں کے علاوہ شہر کے مختلف علاقوں میں نارتھ کراچی، کھارا در، لانڈھی اور سائٹ میں غیر قانونی چھوٹی منڈیاں بھی لگ رہی ہیں۔ کیٹل فارم ہائوسز انڈسٹری نے بکرا1000 روپے کلو اور گائے 6000 روپے من فروخت کرنے کا پیکج تیار کیا ہے جس پر عملدر آمد بھی شروع ہو چکا ہے۔

Tags: