بلدیاتی انتخابات میں خون خرابے کا خدشہ ہے‘ ممتاز بھٹو

September 7, 2015 3:57 pm0 commentsViews: 20

سندھ میں دھاندلی کیلئے زرداری کے خاص افسران کو تعینات کیا جارہا ہے
بلدیاتی انتخابات رینجرز کی نگرانی میں کرائے جائیں‘ جلال محمود شاہ کا بھوک ہڑتالی کیمپ میں خطاب
کراچی (اسٹاف رپورٹر) مسلم لیگ ( ن ) کے مرکزی رہنما سردار ممتاز علی بھٹونے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات میں خون خرابہ ہونے کا خدشہ ہے جن افسران کو تعینات کیا جا ر ہاہے وہ سرکاری ملازم نہیں لگتے ہیں بلکہ زرداری کے ملازم ہیں۔کرپشن کے خلاف کارروائیاں سندھ کے امور میں مداخلت نہیں ہے ،نیب اندرون سندھ میں بھی کارروائیاں کرے۔ تحریک انصاف میں شمولیت کا فیصلہ نہیں کیا بلکہ رابطے میں ہوں۔وہ سندھ یو نائیٹڈ پارٹی کے تحت کراچی پریس کلب کے باہر منعقدہ بھوک ہڑتالی کیمپ سے اظہاریکجہتی کے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کر رہے تھے۔سردار ممتاز علی بھٹو نے کہا کہ پیپلز پارٹی سندھ کا ماس اور ہڈیا ں کھا گئی ہے اب جو بچا ہے وہ بھی کھا رہی ہے لوٹ مار کا بازار گرم کیا ہوا ہے ۔لوگوں میں برداشت ختم ہو گئی ہے پیپلز پارٹی صرف اپنا پیٹ بھر رہی ہے انہوں نے کہا کہ رینجرز جو کارروائیاں کر رہی ہے اس سے کراچی میں کافی حد تک امن قائم ہو چکا ہے ،رینجرز کو اپنی کارروائیوں کا دائر وسیع کرنا چاہیے اور اندرون سندھ میں بھی کرپٹ عناصر کے خلاف کارروائی کی ضرورت ہے ۔انہوں نے کہا کہ بلدیاتی انتخابات میں بھر پور حصہ لیں گے لیکن خون خرابے کا خدشہ ہے کیونکہ جو افسران تعینات کئے گئے ہیں وہ خود کو سرکاری ملازم نہیں سمجھتے ہیں بلکہ زرداری کے ملازم ہیں اور وہ دھاندلی کا منصوبہ بنا رہے ہیں ۔سندھ یو نائیٹڈ پارٹی کے سر براہ سید جلال محمود شاہ نے کہا کہ ہم کرپشن کے خلاف جدو جہد کر رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ہم عوام کو آگاہی فراہم کر رہے ہیں کہ کس طرح ان کے حقوق غصب کئے جا رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ رینجرز اچھا کام کر رہی ہے ہم چاہتے ہیں کہ بلدیاتی انتخابات رینجرز کی نگرانی میں کرائے جائیں۔بعدازاں سندھ یو نائیٹڈ پارٹی نے تین روزہ بھوک ہڑتالی کیمپ ختم کر دیا۔

Tags: