الطاف حسین کے بیانات و تصاویر پر پابندی کیخلاف اپیل دائر کرینگے فاروق ستار

September 8, 2015 1:58 pm0 commentsViews: 28

ایم کیو ایم کا موقف سنے بغیر فیصلے سے پارٹی کے رہنمائوں‘ کارکنوں اور عوام کو دلی صدمہ پہنچا ہے‘ کسی قسم کا نوٹس نہیں دیا گیا
لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے میں تکنیکی خامیاں ہیں‘ مائنس الطاف حسین کا کوئی تصور نہیں‘ فروغ نسیم کا پریس کانفرنس سے خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ایم کیو ایم کی رابطہ کمیٹی کے سینئر رہنما ڈاکٹر محمد فاروق ستار نے کہا ہے کہ ایم کیوا یم لاہور ہائی کورٹ کی جانب سے الطاف حسین کی تقاریر اور تصاویر شائع کرنے پر عارضی پابندی کو انصاف کے تقاضوں کے منافی سمجھتی ہے، مذکورہ کیس میں ایم کیوایم کو جوابدہی کیلئے کسی قسم کا نوٹس نہیں بھیجا گیا اور آزادی اظہار رائے کو صلب کیا گیا جو فطری انصاف کے تقاضوں کے خلا ف ہے۔ اس فیصلے پر لاہور ہائی کورٹ میں نظر ثانی کی اپیل دائر کی جائے گی اور قانونی پہلوئوں کا جائزہ لینے کے بعد سپریم کورٹ سے بھی رجوع کیا جائے گا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہورہائی کورٹ کی جانب سے ایم کیوا یم کے قائد الطاف حسین کی تصاویر و بیانات پر پابندی عائد کئے جانے کے بعد کراچی پریس کلب میں اہم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر ایم کیوا یم کی رابطہ کمیٹی کے رکن سید امین الحق، ایم کیو ایم کی لیگل ایڈکمیٹی کے صدر محفوظ یار خان اورسینئر رہنماو معروف قانون دان بیرسٹر فروغ نسیم انکے ہمراہ تھے۔ انہوں نے کہاکہ الطاف حسین اور ایم کیوا یم لاہور ہائی کورٹ کے معزز جج صاحبان کا احترام کرتے ہیں، ایم کیو ایم کا موٖقف سنے بغیر فیصلہ آنے سے ایم کیو ایم کے رہنماؤں، کارکنان اور عوام کو دلی صدمہ پہنچا ہے۔ فروغ نسیم نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 17 کے مطابق اور سپریم کورٹ کے فیصلے کے مطابق کورٹ کسی سیاسی جماعت پر پابندی عائد نہیں کر سکتی۔ انہوں نے کہاکہ لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے میں ٹیکنیکل پیرائے سے خامیاں ہیں۔انہوں نے صحافی برادری سے درخواست کی کہ وہ اس حساس نوعیت کے معاملے پر کسی بھی قسم کے بیانات شائع کرنے میں احتیاط سے کام لیں۔ ایک سوال کے جوا ب میں فروغ نسیم نے کہاکہ مائنس الطاف حسین کا کوئی تصور نہیں ہے ایم کیوا یم کا ہر ایک کارکن اور رہنما الطاف حسین کی قیادت میں متحد ہے۔

Tags: