ضلعی وسطی میں ٹارگٹ کلر سرگرم‘ صحافی سمیت 3 افراد قتل

September 10, 2015 3:40 pm0 commentsViews: 25

سرسید میں موٹر سائیکل سوار ملزمان نے صحافی پر فائرنگ کردی‘ زخمی صحافی کو اسپتال لے جایا جارہا تھا کہ وہ راستے میں دم توڑ گئے
نارتھ کراچی میں مسلح ملزمان نے بیکری پر فائرنگ کردی جس سے بیکری کا مالک اور ملازم ہلاک ہوگئے
کراچی (کرائم رپورٹر)ضلع وسطی میں دہشتگردوں نے ایک گھنٹے کے دوران سینئر صحافی اور دکاندار سمیت3افراد کوفائرنگ کرکے جاں بحق کردیا ،شاہ فیصل میں فائرنگ سے سنی تحریک کاکارکن شدید زخمی ہوا ۔قتل ہونے والے دو دکاندار اہلسنت والجماعت کے ہمدرد تھے ،تفصیلات کے مطابق سرسید کے علاقے نارتھ کراچی 11/C2 صدیقی مارکیٹ کے قریب ایک موٹر سائیکل پر سوار دو مسلح ملزمان نے کورے کار نمبر AKQ-792 پر فائرنگ کردی اور موقع سے فرار ہوگئے گولیوں کی تڑتڑاہٹ سے مذکورہ مقام پر بھگدڑ مچ گئی ، پولیس اطلاع ملتے ہی موقع پر پہنچی اور کار سوارسینئرصحافی 42 سالہ آفتاب عالم ولد ضیاء اللہ کو شدید زخمی حالت میں عباسی شہید اسپتال پہنچایا جارہا تھا کہ راستے میں دم توڑ گئے ، جن کی لاش آغا خان اسپتال لائی گئی ، جس کے بعد لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے عباسی شہید اسپتال لایا گیا ، ایس ایچ او جاوید احمد یوسفزئی کا کہنا ہے کہ مقتول آفتاب عالم صحافی تھے اور نجی ٹی وی چینلز سے وابستہ رہے اور ایک ڈیڑھ سال سے بے روزگار تھے ،پولیس کا کہنا ہے کہ واقعہ اس وقت رونماہوا جب مقتول اپنے بچوں کو اسکول لینے جارہے تھے ،مقتول اپنی مذکورہ کار گھر کے داخلی دروازے سے نکال ہی ر ہا تھا کہ اس ہی دوران گھات لگائے دہشتگردوں نے قریب آکر سر اور سینے پر گولیاں ماری اور فرارہوگئے ،کار آدھی گھر کے اندر اور آدھی باہر تھی،پولیس نے بتایاکہ ابتدائی تفتیش کے دوران معلوم ہوتا ہے کہ ملزمان نے انکی ریکی کی ہوئی تھی اور انہیں معلوم تھا کہ یہ کس وقت بچوں کو اسکول لینے جاتے ہیں ،واقعہ دہشتگردی معلوم ہوتا ہے تاہم پولیس اور رینجرز واقعہ کی مزید تفتیش کررہی ہے ، ابھی پولیس اس واقعہ کے حوالے سے تفتیش اور شواہد جمع ہی کررہی تھی کہ ایک گھنٹے بعد اس ہی ڈویژن کے دوسرے تھانے خواجہ اجمیر نگری کے علاقے نارتھ کراچی سیکٹر فائیو بی ون پیلا اسکول کے قریب واقع المدینہ بیکری میں 125 موٹر سائیکل پر سوار دو مسلح ملزمان نے اندھا دھند فائرنگ کردی اور موقع سے فرار ہوگئے ،گولیاں لگنے سے دو افراد 30 سالہ عمران ولد اقبال اور 25 سالہ وقاص شدید زخمی ہوگئے جن کو فوری طور پر عباسی شہید اسپتال پہنچایا جارہا تھا کہ اسپتال منتقلی کے دوران ہی دونوں دم توڑ گئے ، ایس ایچ او تصور امیر کا کہنا ہے کہ مقتول عمران اقبال بیکری کامالک تھا اور وقاص اسکا ملازم تھا وہ دونوں بیکری میں موجود تھے کہ دو ملزمان نے بیکری میں گھس کر اندھا دھند فائرنگ کردی اور فرار ہوگئے ،مشتعل اہلخانہ بغیر کارروائی کے عباسی شہید اسپتال سے لاشیں لیکر چلے گئے،اس اطلاع پر اہلسنت والجماعت کے عہدیداران اور کارکنان کی بڑی تعداد بھی اسپتال پہنچ گئی ،تاہم پولیس نے مقتولین کے اہلخانہ کو بات چیت سے منتشر کیا اور لاشیں دوبارہ اسپتال لیکر آئے جہاں پولیس نے ضابطے کی کارروائی کے بعد لاشیں ورثاء کے حوالے کردی ۔ اہل سنت و الجماعت کے ترجمان عمر معاویہ کا کہنا ہے کہ ہلاک ہونے والے دونوں افراد ہمارے ہمدرد تھے ، ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ دہشت گردوں نے کچھ روز قبل بیکری کے مالک عمران سے پانچ لاکھ روپے طلب کیا تھا اور نہ دینے پر دہشت گردوں نے فائرنگ کرکے قتل کردیا۔

Tags: