حرم شریف میں کرین گرنے سے 110 عازمین حج شہید‘ 300 زخمی زخمیوں میں 52 پاکستانی بھی شامل

September 12, 2015 1:14 pm0 commentsViews: 57

صفا ومروہ کے درمیان توسیعی منصوبے پر کام جاری تھا کہ شدید طوفانی بارش کے باعث کرین گرگئی‘ جائے حادثہ پر 30 ہزار افراد موجود تھے‘ پاکستانی زخمیوں میں 6 کی حالت نازک
حادثے کی اطلاع پر سینکڑوں افراد خون کا عطیہ دینے اسپتالوں میں پہنچ گئے‘ رش کے باعث زخمیوں کو ایمبولینسوں میں ہی طبی امداد فراہم کی گئی‘ گورنر مکہ نے واقع کی تحقیقات کا حکم دیدیا
مکہ مکرمہ/ اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) مکہ مکرمہ حرم شریف میں طوفان کے باعث کرین گرنے سے 110 عازمین حج شہید جبکہ300 سے زائد زخمی ہوگئے۔ زخمیوں میں52 پاکستانی بھی شامل ہیں۔ جبکہ تمام زخمیوں کو قریبی اسپتال میںداخل کر دیا گیا ہے۔ جبکہ پاکستانی زخمیوں میں6 افراد کی حالت نازک بتائی جاتی ہے۔ حرم شریف میں توسیعی منصوبے پر کام جاری تھا کہ طوفان اور شدید بارش کے باعث کرین گر گئی۔ حادثہ صفاء و مروہ کے درمیان پیش آیا۔ کرین تیز ہوا اور طوفانی بارش کے باعث گری ، شہید ہونے والوں میں درجنوں عازمین حج بھی شامل ہیں۔ جائے حادثہ کو دو دن قبل نمازیوں کیلئے کلیئر کیا گیا تھا۔ کرین گرنے کے بعد اسپتالوں میں رش کے بعد متعدد زخمی ایمبولینسوں میں ہی موجود رہے اور ان کو طبی امدادی دی گئی، زخمی اتنے زیادہ تھے کہ اسپتالوں میں بیڈ کم پڑ گئے شدید طوفان کے باعث کئی جگہ پر درخت بھی جڑوں سے اکھڑ گئے۔ سعودی حکام کے مطابق بیشتر زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے جس کے باعث اموات میں اضافے کا خدشہ ہے۔ سعودی حکام کے مطابق حادثے کے وقت طوفانی ہوائیں چل رہی تھیں۔ جب کہ بارش بھی ہو رہی تھی، جس کے باعث کرین کا توازن بر قرار نہ رہا اور گر گئی۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق 2 روز قبل جگہ کو نمازیوں کیلئے کلیئر کیا گیا تھا۔ سانحے کے باوجود بیت اللہ کا طواف جاری رہا۔ حادثے کے وقت جائے حادثہ پر30 ہزار سے زائد افراد موجود تھے۔ امدادی کارکنوں کے مطابق اسپتالوں میں جگہ کم پڑ گئی۔ جب کہ زخمیوں کو ایمبولینسوں میں رکھا گیا اور بعد ازاں دیگر اسپتالوں میں منتقل کیا گیا۔ جب کہ حادثے کی جگہ پر صفائی کا کام جلد مکمل کر لیا گیا اور عبادت کا سلسلہ دوبارہ معمول کے مطابق شروع ہوگیا۔ واقعہ صفا و مروہ کے درمیان پیش آیا۔ جس وقت واقعہ پیش آیا، ہزاروں عازمین عبادات میں مصروف تھے۔ گورنر مکہ شہزاد خالد الفیصل نے واقعے کی تحقیقات کا حکم دے دیا ہے۔ واضح رہے کہ جس جگہ سانحہ پیش آیا، وہ مسجد حرام کا نیا توسیعی تعمیراتی حصہ ہے۔ سعودی حکام کا کہنا ہے کہ ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے، کیونکہ جس وقت حادثہ پیش آیا۔ مسجد الحرام نمازیوں سے بھری ہوئی تھی۔ سوشل میڈیا پر تصاویر میں بھی بہت سی لاشوں اور زخمیوں کو دکھایا گیا ۔ ویڈیو شیئرنگ کی ویب سائٹ یو ٹیوب پر جاری ہونے والی ایک ویڈیو میں کرین گرنے کے لمحے کو دیکھا جا سکتا ہے۔ اس ویڈیو کی تصدیق نہیں ہو سکی۔ لیکن اس میں کرین گرنے کے بعد احاطے میں افرا تفری نظر آتی ہے۔ اور لوگ چیخ رہے ہوتے ہیں۔ دنیا بھر سے لاکھوں مسلمان فریضہ حج کی ادائیگی کیلئے مکہ پہنچے ہوئے ہیں اور اس سال حج کیلئے مجموعی طور پر 30 لاکھ سے زیادہ مسلمانوں کی سعودی عرب آمد متوقع ہے۔ یہ واضح نہیں کہ اس حادثے کی وجہ کیابنی، تاہم عرب ذرائع ابلاغ کا کہنا ہے کہ کرین تیز ہوائوں کی وجہ سے مسجد کی چھت پھاڑتے ہوئے نیچے جا گری۔ مکہ میں عازمین حج اور زائرین کی بڑھتی ہوئی تعداد کی وجہ سے پرانی عمارتوں کے انہدام اور ان کی جگہ بلند و بالا ہوٹلوں اور دیگر کثیر المنزلہ عمارتوں کی تعمیر کا سلسلہ ایک عرصے سے جاری ہے۔ حادثات سے متعلق معلومات حاصل کرنے کیلئے فون نمبر 042111725425 پر یا سعودی عرب میں فون نمبر 8001166622 پر رابطہ کیا جا سکتا ہے۔

حرم شریف حادثہ‘ ایک پاکستانی بھی شہید
مکہ مکرمہ ( مانیٹرنگ ڈیسک) حرم شریف میں پیش آنے والے اندوہناک حادثے میں ایک پاکستانی عازم حج بھی شہید ہوگیا۔ سعودی عرب میں پاکستانی قونصلر جنرل نے بتایا کہ حادثے میں زخمی ہونے والے30 پاکستانیوں کا اسپتال میں علاج کیا جا رہا ہے جبکہ20 پاکستانی عازمین حج کو طبی امداد کے بعد فارغ کردیا گیا ہے۔

Tags: