سول اسپتال میں یومیہ2 لاکھ روپے کی ادویات چوری ہونیکا انکشاف

September 12, 2015 2:15 pm0 commentsViews: 36

اسپتال میں چوری کی روک تھام کیلئے اسٹورز میں خفیہ کیمرے لگانے کی تجویز پر غور شروع ہو گیا، جلد عملدرآمد ہونیکا امکان
دوائوں کی چوری میں ایمبولینس استعمال ہو رہی ہیں، یکم ستمبر سے ادویات کی رپورٹ چیک ہو رہی ہیں
کراچی( کرائم ڈیسک) سول اسپتال کراچی کی انتظامیہ نے ادویہ کی چوری روکنے کیلئے اسٹور میں کیمرے لگانے کی تجویز پر غور کرنا شروع کردیا ہے‘ اسپتال سے یومیہ دو لاکھ روپے کی ادویہ چوری ہوجاتی ہیں۔ تفصیلات کے مطابق سول اسپتال کراچی کی انتظامیہ نے ادویہ کی چوری کی روک تھام کیلئے مختلف انتظامات پر غور کرنا شروع کردیا ہے‘ اس سلسلے میں پہلی ستمبر سے روزانہ کی بنیاد پر جاری کی جانے والی ادویہ کی رپورٹ چیک کی جارہی ہے‘ ذرائع کے مطابق روزانہ کی بنیاد پر سول ساپتال کراچی سے2لاکھ روپے کی ادویہ چوری ہوتی ہیں۔ اس سلسلے میں اسپتال کی ایمبولینس استعمال ہوتی ہیں۔ افسران اور پیرا میڈیکل رہنمائوں کو سرکاری ایمبولینس کے ذریعے پک اینڈ ڈراپ کی سہولت فراہم کی جاتی ہے اور انہیں اسپتال لے جاتے ہوئے ادویہ ان ایمبولینسوں میں رکھ کر باہر بھیج دی جاتی ہیں۔ اس کے علاوہ ادویہ وارڈز کی جانب روانہ کی جاتی ہیںتو راستے میں آدھی ادویہ غائب کردی جاتی ہیں۔ اسپتال کی او پی ڈی فارمیسی میں اگر ایک دوا20 کی تعداد میں آتی ہے تو 10 مریضوں کو فراہم کی جاتی ہیں جبکہ باقی چوری ہوجاتی ہیں۔

Tags: