مقابلے میں ہلاک ملزمان ایم کیو ایم کے کارکن تھے، رینجرز ترجمان

September 12, 2015 2:17 pm0 commentsViews: 26

مرنے والے زوہیب اللہ، کاشف خلیل، شاہد غلام اور محمد عدیل کورنگی سیکٹر یونٹ75 سے تعلق رکھتے تھے
ہلاک شدگان ایم کیو ایم لیگل ایڈ کمیٹی کے وکیل حسنین بخاری کی ٹارگٹ کلنگ میں ملوث تھے، رینجرز کا دعویٰ
رینجرز نے ایم کیو ایم کی جانب سے ماورائے عدالت قتل کے دعوے کو مسترد کر دیا، پروپیگنڈہ بے بنیاد قرار
کراچی (کرائم رپورٹر)گلشن معمار میں جمعرات کی شب رینجرز سے مقابلے میں ہلاک ہونے والے چار دہشت گردوں کی شناخت ہوگئی،تفصیلات کے مطابق پاکستان رینجرز سندھ نے جمعرات کی شب انٹیلی جنس اطلاعات پر گلشن معمار کے علاقے ناردن بائی پاس ایم ڈی کٹ کے قریب واقع فارم ہائوس پردہشت گردوں کی اطلاع پر چھاپہ مارکارروائی کی ، دہشت گردوں نے رینجرز اہلکاروں کو اپنی طرف آتے دیکھ کر فائرنگ کردی تھی جس کے نتیجے میں رینجرز کا ایک اہلکار زخمی ہوا تھا جوابی فائرنگ سے چار دہشت گرد موقع پر ہلاک ہوگئے تھے، رینجرز ترجمان کے مطابق ہلاک ہونے والے دہشت گردوں نے 4 مارچ کو کورنگی ڈیڑھ مٹکے والی پلیہ کے قریب فائرنگ کرکے متحدہ قومی موومنٹ لیگل ایڈ کمیٹی کے ممبر وکیل حسنین بخاری کو قتل کیا تھا ، رینجرز نے ہلاک ہونے والے دہشت گردوں کی لاشیں شناخت کیلئے ایدھی سرد خانے میں رکھوادی تھیں ، جمعہ کے روز ہلاک ہونے والے چار دہشت گردوںکی شناخت زوہیب اللہ، کاشف خلیل ،شاہد غلام اور محمد عدیل کے ناموں سے ہوئی ، متحدہ قومی موومنٹ رابطہ کمیٹی کے مطابق ہلاک ہونے والے تین افراد متحدہ قومی موومنٹ کورنگی سیکٹر کے یونٹ 75 کے کارکنان تھے ان افراد کو مختلف اوقات میں 4 ماہ قبل کورنگی کے مختلف علاقوں سے گرفتار کیا تھا، جن کو رینجرز اہلکاروں نے ماروائے عدالت قتل کردیا، پاکستان رینجرز سندھ نے متحدہ قومی موومنٹ کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ ایم کیو ایم کی طرف سے کیا جانے والا پروپیگنڈا کہ ایم کیو ایم کے چار کارکنان کو مبینہ طور پر ماورائے عدالت قتل کیا گیا گمراہ کن اور حقائق کے منافی ہے ، اطلاعات کے مطابق یہ پارٹی کے ایماء پر ایم کیو ایم کے سیف ہائوسز میں روپوش تھے ، یہ دہشتگرد ایم کیو ایم لیگل ایڈ کمیٹی کے ممبر وکیل حسنین بخاری کے قتل میں ملوث تھے اور اطلاعات کے مطابق یہ پارٹی ہائی کمان کی ایما پر روپوش تھے ، جیسا کہ پہلے بھی نائن زیرو آپریشن کے دوران جاں بحق ہونے والے ایم کیو ایم کارکن وقاص شاہ کے قاتل آصف علی جس کو پارٹی ہائی کمان نے اندرون سندھ روپوش کرادیا تھا ، جس کو رینجرز نے شہداد پور کے علاقے میں کارروائی کرکے گرفتار کیا۔

چار دہشت گردوں کی ہلاکت کا
مقدمہ رینجرز کی مدعیت میں درج
کراچی (اسٹاف رپورٹر)گلشن معمار میں جمعرات کو ہونے والے مقابلے میں چار دہشتگردوں کی ہلاکت کا مقدمہ رینجرز افسر کی مدعیت میں درج کرلیا گیا۔ پولیس کے مطابق مقدمہ الزام نمبر233/15انسداد دہشتگردی ایکٹ، پولیس مقابلے سمیت دیگر دفعات کے تحت درج کیا گیا، رینجرز نے دعویٰ کیا تھا کہ مارے جانے والے ملزمان وکیل کے قتل میں ملوث تھے جبکہ متحدہ قومی موومنٹ کی جانب سے دعویٰ کیا گیا ہے کہ مارے جانے والے افراد میں سے تین کا تعلق متحدہ قومی موومنٹ سے تھااور وہ تین ماہ سے لاپتہ تھے۔

Tags: