وفاقی حکومت گرانے کیلئے سیاسی رابطوں میں تیزی پیپلزپارٹی کے ناراض جماعتوں سے رابطے

September 14, 2015 4:23 pm0 commentsViews: 24

ہماری حکومت ختم کرنے کیلئے سیاسی اتحاد بن رہے ہیں، حکومت مزید تین سال رہ گئی تو پھرا س کو کوئی شکست نہیں دے سکے گا،احسن اقبال
پیپلزپارٹی کی قیادت نے حکومت مخالف سیاسی الائنس کی تشکیل کا فیصلہ کرلیا، پنجاب میں حکمران جماعت مسلم لیگ کے خلاف بلدیاتی انتخابات میں جارحانہ انداز میں عوامی رابطہ مہم چلانے کی تیاریاں شروع کردی گئیں، بڑے عوامی جلسوں سے بلاول بھٹو براہ راست یا وڈیو لنک پر خطاب کریں گے
مسلم لیگ ن پیپلزپارٹی سے تعلقات بہتر بنانے کی کوششوں میں مصروف، اسحق ڈار نے مولانا فضل الرحمن، اسفندیارولی اور سراج الحق کے توسط سے پیپلزپارٹی کی قیادت سے رابطے کا فیصلہ کرلیا، پیپلزپارٹی کے علاوہ ناراض جماعتوں تحریک انصاف اور ایم کیو ایم سے بھی رابطے کیے جائیںگے
کراچی( نمائندہ خصوصی/آن لائن) پاکستان میں وفاقی حکومت کو گرانے کیلئے سیاسی رابطوں میں تیزی آگئی ہے‘ پیپلز پارٹی نے نواز حکومت کیخلاف جارحانہ پالیسی اختیار کرلی اور نواز حکومت سے مخالفت رکھنے والی جماعتوں سے رابطے شروع کردیئے ہیں‘ سیاسی حلقے آئندہ تین ماہ پاکستانی سیاست کیلئے انتہائی اہم قرار دے رہے ہیں کوئی بڑی سیاسی تبدیلی بھی آسکتی ہے‘ دوسری طرف مسلم لیگ سے تعلق رکھنے والے وفاقی وزیر احسن اقبال نے بھی کہا ہے کہ ہماری حکومت ختم کرنے کیلئے سیاسی اتحاد بن رہے ہیں‘ ذرائع کے مطابق حکمران مسلم لیگ کی وفاقی حکومت کو آنے والے دنوں میں بڑے سیاسی بحرانوں کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے کیونکہ ملک کی اہم جماعتیں پیپلز پارٹی، تحریک انصاف اور متحدہ قومی موومنٹ حکمران مسلم لیگ سے خائف نظر آ رہی ہیں اس کیخلاف بڑے پیمانے پر احتجاج کی منصوبہ بندی کررہی ہیں۔اسی لیے آنے والے دنوں میں حکومت کے خلاف ایک بڑا سیاسی الائنس قائم ہونے جا رہا ہے۔ ذرا ئع کے مطا بق پیپلز پارٹی کی قیادت نے حکومت مخالف سیاسی الائنس کی تشکیل کیلئے فیصلہ کر لیا ہے اور اس حوالے سے آئندہ دنوں میں پیپلز پارٹی بڑے سیاسی رابطوںکا آغاز کرنے جا رہی ہے، پیپلز پارٹی نے پنجاب میں حکمران مسلم لیگ کے خلاف بلدیاتی انتخابات میں جارحانہ انداز میں عوامی رابطہ مہم چلانے کا بھی فیصلہ کیا ہے اور عوام دشمن پالیسیوں کو اجاگر کریں گے، پنجاب میں بڑے عوامی جلسوں سے بلاول بھٹو زرداری براہ راست یا وڈیو لنک پر خطاب کریں گے۔دوسری جانب حکمران مسلم لیگ کے ذرائع کا کہنا ہے کہ پیپلز پارٹی کے ساتھ تعلقات کی بہتری کیلئے کوششیں کی جا رہی ہیں اور اس حوالے سے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی جانب سے مولانا فضل الرحمن، اسفند یار ولی اور سراج الحق کے توسط سے پیپلزپارٹی کی قیادت سے ایک مرتبہ پھر رابطہ کیا جائے گا اور ان کے تحفظات دور کرنے کی یقین دہانی کرائی جائے گی۔علاوہ ازیں نارووال میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر منصوبہ بندی اور ترقی احسن اقبال نے کہا ہے کہ ہماری حکومتختم کرنے کیلئے اتحاد بن رہے ہیں‘ ملک سے دہشت گردی ختم‘ بجلی کے نئے منصوبے‘ کراچی لاہور موٹر وے‘ گوادرسے ڈیرہ اسماعیل خان تک روٹ بن گئے اور چین پاکستان اقتصادی راہداری کے منصوبے فعال ہوگئے تو کوئی دنیا کی طاقت (ن) لیگ کو 2018 ء کا الیکشن نہیں ہراسکتی‘ انہوں نے تقریب سے خطاب میں کہا کہ لوگوں کو حسد ہے کہ یہ حکومت 3 سال اسی طرح رہ گئی تو اس کو کوئی شکست نہیں دے سکتا‘ اسی لئے7,7 جماعتوں کا اتحاد بن رہا ہے‘ پروپیگنڈہ کیا جارہا ہے کہ کسی طرح اس حکومت کو ختم کریں‘ وفاقی وزیر نے کہا کہ پچھلے سال بڑی سازشیں ہوئیں‘ دھرنے کے پیچھے بھی وہی قوتیں تھیں جو نہیں چاہتی تھیں کہ حکومت اپنے5 سال پورے کرے لیکن اللہ تعالیٰ نے ان کو ناکام کیا‘ احسن اقبال نے کہا کہ پاکستان میں دہشت گردوں کی کمر توڑ دی گئی ہے‘ کراچی کے لوگ گواہی دیں گے ہم نے کراچی کو پرسکون کردیا‘ اب وہ وقت دور نہیں جب ملک میں دہشت گردی کا کوئی واقعہ رونما نہیں ہوگا۔

Tags: