نادرا کا ریکارڈ غیرملکی خفیہ ایجنسیوںکے ہاتھ لگنے کا خدشہ

September 14, 2015 5:12 pm0 commentsViews: 29

حساس ادارے نے نادرا کے سربراہ کو تحریری طور پر آگاہ کردیا، ڈیٹا بھارتی، امریکن اور اسرائیلی خفیہ ایجنسیوں کے ہاتھ لگ سکتا ہے
انگوٹھوں کا نشان لینے والا سسٹم فرانسیسی کمپنی سے خریدا گیا تھا، اس کا تعلق اسرائیل سے ہے، نادرا کی جانب سے ردعمل کااظہار نہیں کیا گیا
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) ملک کے ایک حساس ادارے نے نادرا ریکارڈ کی لیکج کے خطرے کا انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس اہم سرکاری ادارے کے پورے ڈیٹا بیس کے دشمن جاسوس ایجنسیوں کے ہاتھ لگنے کا بھر پور امکان ہے‘ حساس ادارے نے نادرا کے سربراہ کو تحریری طور پر اپنے شکوک سے آگاہ کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانیوں کا حساس ڈیٹا لیک ہو کر بھارتی ایجنسی را‘ امریکی سی آئی اے اور اسرائیلی موساد تک پہنچنے کے خطر کو رد نہیں کیا جاسکتا‘ خط کی کاپی کے مطابق اس شک کی بنیاد اس حقیقت کو بنایا گیا ہے کہ انگوٹھوںکے نشانات لینے والا آٹو میٹک پرنٹ آئیڈ نٹی فیکشن سسٹم نادرا نے2004 ء میں فرانسیسی کمپنی سیگم سے خریدا تھا جس کا حقیقی تعلق اسرائیل سے ہے۔ اس اہم نظام سے منسلک ہونے کی صورت میں دانستہ یا نادانستہ طور پر رقوم کا ڈیٹا بیس لیک ہو کر کسی تک بھی پہنچ سکتا ہے۔ نادرا کو تجویز دی گئی ہے کہ اس سلسلے میں محفوظ سافٹ ویئر‘ ہارڈ ویئر ڈیولپ کئے جائیں اور اس سلسلے میںمحفوظ سوفٹ ویئر ڈیولپ کئے جائیں اور اس کیلئے حریف اور مخالف ممالک کے بجائے دوست اور قابل اعتماد ملکوں پر انحصار کیا جائے ۔ اس حوالے سے نادرا کے ترجمان سے نکتہ نظر جاننے کیلئے2 ستمبر کو ان سے رابطہ کیا گیا انہیں ایک سوال نامہ بھیجا گیا مگر انہوں نے کسی رد عمل کااظہار نہیں کیا۔

Tags: