پنجاب میں کراچی طرز کا ’’آپریشن‘‘شروع کرنے کا فیصلہ

September 15, 2015 1:43 pm0 commentsViews: 40

وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پنجاب کے قریبی رشتہ داروں پر ایکسائزڈیوٹی چوری کرنے کا مقدمہ،گرفتاری کیلئے دفاتر پر چھاپے مارے گئے
ملتان میں خودکش حملے کے بعد پنجاب میں دہشت گرد، ان کے سہولت کاروں اور ملک دشمن عناصر کے خلاف آپریشن جلد شروع کیا جائے گا، پہلے مرحلے میں جنوبی پنجاب میں آپریشن ہوگا، بعد میں دائرہ کار دیگر اضلاع تک بڑھایاجائے گا
ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں بھی کراچی کے بعد پنجاب میں دہشت گردوں کے خلاف آپریشن کرنے کا فیصلہ کیا جاچکا ہے،جنوبی پنجاب میں دہشت گردوں اور غیرملکیوں کے ٹھکانوں کے بارے میں شواہد حاصل کرلیے گئے
کروڑوں روپے کی فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی چوری میںنوازاورشہباز شریف کے قریبی رشتہ دارملوث ہیں، عبداللہ شوگر ملز اور حبیب وقاص شوگر ملز کے ڈائریکٹروں کی گرفتاری کے لیے فیصل آباد میں بھی چھاپے مارے گئے
لاہور ( مانیٹرنگ ڈیسک/ نیٹ نیوز) سیکورٹی اداروں نے کراچی کے بعد پنجاب میں بڑے آپریشن کی تیاری شروع کردی ہیں آئندہ چند ہفتوں کے دوران پنجاب میں دہشت گردوں کے خلاف بڑا آپریشن شروع کر دیا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق ملتان خود کش دھماکے کے بعد پنجاب میںدہشت گردوں، سہولت کاروں، ملک دشمن عناصر کے خلاف کراچی کی طرز پر آپریشن شروع کرنے کا فیصلہ کیاگیا ہے ذرائع کے مطابق پہلے مرحلے میں جنوبی پنجاب میں آپریشن شروع کیا جائے گا۔ دوسرے مرحلے میں پنجاب کے دیگر اضلاع تک دائرہ کار وسیع کیا جائے گا۔ ایپکس کمیٹی کے اجلاس میں کراچی کے بعد پنجاب میں دہشت گردی کے خلاف آپریشن کرنے کا بھی فیصلہ کیا جا چکا ہے اور یہ بات بھی زیر غور آئی ہے کہ اگر معاملات کنٹرول نہ ہوئے تو کسی بھی وقت بڑٖا آپریشن کر دیا جائیگا۔ معتبر ذرائع کے مطابق جنوبی پنجاب میں مبینہ کئی دہشت گرد اور غیر ملکی ایسے ہیں جنہوں نے ٹھکانے بنا رکھے ہیں اور وہ وہاں سے دہشت گردی کو فروٖغ دے رہے ہیں۔ جنوبی اور شمالی پنجاب کے13 اضلاع میں موجود متوقع دہشت گرد، ان کے سہولت کار اور غیر ملکی عناصر این جی اوز اور دیگر نجی کمپنیوں کے ذریعے دہشت گردی، فرقہ واریت کو فروغ دے رہے ہیں۔ ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں حساس ادارے بھی رپورٹ پیش کر چکے ہیں کہ جنوبی پنجاب8 ، وسطی پنجاب 3 اور شمالی پنجاب کے2 اضلاع میں دہشت گرد عناصر اور ان کے ٹھکانے ہونے کی اطلاعات ہیں۔ دوسری طرف لارجر ٹیکس یونٹ کے انوسٹی گیشن اینڈ پراسیکیوشن ونگ نے کروڑوں روپے کی فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی کی چوری کے مقدمہ میں ملوث وزیر اعظم اور وزیر اعلیٰ کے قریبی رشتہ داروں کی گرفتاری کیلئے ان کے دفاتر اور گھروں پر چھاپے مارنے شروع کر دیئے ہیں جبکہ گرفتاری کے خوف سے ملزم روپوش ہو گئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق یہ چھاپے لارجر ٹیکس یونٹ کے ڈپٹی کمشنر صاحبزادہ عمر ریاض کی سربراہی میں قائم خصوصی ٹیم نے مارے تاہم کوئی ملزم گرفتار نہیں ہو سکا۔ پہلا چھاپہ حسیب وقاص شوگر ملز کے دفتر6، ایف ماڈل ٹائون پر مارا گیا جبکہ دوسر اچھاپہ بلاک ماڈل ٹائون میں مذکورہ مل کے ڈئریکٹروں کی رہائش گاہ پر مارا گیا۔ کسٹم ذرائع نے بتایا کہ عمر ریاض کی سربراہی میں عبداللہ شوگر ملز اور حسیب وقاص شوگر ملز کے ڈائریکٹروں کی گرفتاری کیلئے فیصل آباد میں بھی چھاپے مارے گئے ہیں۔ میاں حسیب الیاس نہ صرف شریف برادران کے چچا زاد بھائی ہیں بلکہ میاں شہباز شریف کے برادر نسبتی اور حمزہ شہباز کے ماموں بھی ہیں۔ مصطفیٰ رضا، وقاص ریاض، حافظ عرفان بٹ، بریگیڈیئر ( ر) ایم اکرم بھی شریف برادران کے قریبی عزیز بتائے جا رہے ہیں۔ ایف بی آر کے ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزمان روپوش رہے اور گرفتار نہ ہو سکے تو انہیں اشتہاری قرار دلوانے کیلئے دوبارہ عدالت سے رجوع کیا جائے گا۔

Tags: