جامعہ کراچی میں بھرتیوں کی تحقیقات شروع‘ انتظامیہ میںکھلبلی مچ گئی

September 15, 2015 1:46 pm0 commentsViews: 43

نیب نے انتظامیہ سے بھرتیوں کے حوالے سے تفصیلات طلب کرلی‘ رجسٹرار کی مکمل تعاون کی یقین دہانی
بغیر اشتہارات اور سلیکشن کے بھرتی ملازمین کی فہرستیں تیار کرنا شروع‘ جعلی ڈگری پر بھرتی اسسٹنٹ رجسٹرار معطل
کراچی (اسٹاف رپورٹر) وفاقی تحقیقاتی ادارے نیب ( قومی احتساب بیورو) نے خلاف ضابطہ بھرتیوں کے معاملے پر جامعہ کراچی کا رخ کرلیا ہے اور جامعہ کراچی کی انتظامیہ سے گزشتہ دور میں مختلف گریڈز میں کی گئی بغیر اشتہارات و سلیکشن بورڈز براہ راست بھرتیوں کی تفصیلات طلب کر لی ہیں۔ نیب کی جانب سے خلاف ضابطہ بھرتیوں کی تفصیلات طلب کرنے کے بعد یونیورسٹی انتظامیہ میں کھلبلی مچ گئی ہے، اور انتظامیہ نے سابق دور میں کی گئی بھرتیوں کو قانونی دائرہ کار میں لانے کی کوشش کرتے ہوئے بھرتیوں کی تفصیلات مرتب کرنی شروع کر دی ہیں جبکہ جعلی ڈگری کی بنیاد پر بھرتی ایک شعبہ انرولمنٹ میں تعینات اسسٹنٹ رجسٹرار عامر جمیل کو معطل بھی کر دیا گیا ہے، معطل کئے گئے اسسٹنٹ رجسٹرار کو سابق دور میں2001ء میں تعینات کیا گیا تھا۔ مذکورہ اسسٹنٹ رجسٹرار کی بی ایس سی کی سند جعلی ثابت ہوئی تھی، رجسٹرار جامعہ کراچی کے احکام پر ڈپٹی رجسٹرار محمد عابد نے سابق دور میں بغیر اشتہار اور سلیکشن بورڈ کے بھرتی کئے گئے ملازمین کا علیحدہ علیحدہ ڈیٹا تیار کرنا شروع کردیا ہے اور اس حوالے سے مختلف12 سے17 گریڈ تک تقرر کئے گئے ملازمین کی تفصیلات تیار کی جا رہی ہیں جو نیب کے حوالے کی جائیں گی۔ ذرائع کہتے ہیں کہ کچھ روز قبل نیب حکام نے رجسٹرار جامعہ کراچی ڈاکٹر معظم علی خان اور شیخ الجامعہ کے مشیر پروفیسر ڈاکٹر سہیل برکاتی سے ملاقات میں ان بھرتیوں کے حوالے سے تفصیلات مانگی تھیں۔

Tags: