20 ہزار ایکڑ اراضی غیر قانونی الاٹ سندھ میں ہزاروں ارب کی کرپشن ہوئی ڈی جی نیب

September 16, 2015 3:34 pm0 commentsViews: 27

ڈھائی ہزار ارب روپے سے زائد کے مقدمات زیر تفتیش‘ کراچی بھر میں چائنا کٹنگ کے پلاٹ فروخت کئے گئے‘ تحقیقات جاری ہیں
ڈیڑھ ارب روپے کی رقم مختلف اداروں اور کرپٹ لوگوں سے واپس لی‘ حکومت یا کسی سیاست دان کیخلاف انتقامی کارروائی نہیں ہورہی ‘ کرنل سراج النعیم
کراچی( اسٹاف رپورٹر ) قومی احتساب بیورو سندھ کے ڈائریکٹر جنرل(ر) کرنل سراج النعیم نے کہا ہے کہ سندھ میں ہزاروں ارب روپے کی کرپشن ہوئی اور 20 ہزار ایکڑ زمین غیر قانونی طور پر الاٹ کی گئی‘ جس کی منسوخی کیلئے متعلقہ حکام سے رابطہ کیا ہے‘ پورے کراچی میں چائنا کٹنگ کے ذریعے غیر قانونی پلاٹ فروخت کئے گئے‘ نیب کراچی نے نیشنل بینک‘ ایف بی آر‘ سائٹ ایڈمنسٹریشن اور ٹھل تعلقہ میونسپل سے کرپشن کے ذریعے لوٹی گئی دو کروڑ بیس لاکھ روپے سے زائد کی رقم اداروں کو واپس کردی‘ نیب کراچی نے رواں سال ایک ارب 50 کروڑ کی رقم مختلف اداروں اور کرپشن میں ملوث افراد سے بازیاب کی ہے‘ کسی کیخلاف سیاسی بنیادوں پر مقدمات نہیں بنارہے اور نہ ہی انتقامی کارروائی کی جارہی ہے‘ نیب کو کوئی حق نہیں کہ عوامی مینڈیٹ لینے والوں کی پگڑی اچھالے‘ رکن سندھ اسمبلی علی نواز شاہ اور دیگرکو ہم نے نہیں احتساب عدالت نے سزا دی جو ہمارے دائرہ کار میں نہیں‘ وہ پیر کو نیب کے دفتر میں تقریب سے خطاب اور بعد ازاں صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے۔ صحافیوں کی جانب سے پوچھے گئے سوال کہ وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کہتے ہیں کہ نیب نے صوبے پر حملہ کیا ہے تو جواب میں ڈی جی نیب نے کہا کہ ہم نے کسی پر حملہ نہیں کیا اور نہ ہی کسی سیاسی شخصیت کے خلاف انتقامی کارروائی کررہے ہیں تاہم جو بھی کرپٹ عناصر ہیں ان کیخلاف کارروائی جاری ہے ‘ ہم کسی حکومت کیخلاف نہیں چل رہے ‘ ہمیں اب بھی سندھ حکومت کی مکمل حمایت حاصل ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے پاس ڈھائی ہزار ارب روپے سے زائد کرپشن کے مقدمات زیر تفتیش ہیں‘ سارا لوٹا ہوا پیسہ سندھ حکومت کو ہی واپس جائیگا۔ چائنا کٹنگ کے حوالے سے تحقیقات جاری ہیں اور اب تک 2ریفرنسز میں جے آئی ٹی بنائی جاچکی ہے‘ کراچی میں ڈھائی ہزار ارب روپے کی زمین غیر قانونی الاٹ کرکے کرپشن کی گئی‘ سراج العنیم نے ایک سوال پربتایا کہ مضاربہ اسکینڈل میں ہم نے کچھ لوگوں کو گرفتار کیا ہے اور عوام سے2 ارب روپے لوٹنے کی شکایات موصول ہوئی تھی۔

Tags: