جعلی ڈاکٹر مویشیوں کے علاج کی آڑ میں تاجروں اور عوام کو لوٹنے لگے

September 16, 2015 4:00 pm0 commentsViews: 37

فی جانور کلیئرنس کی مد میں 50 روپے کے بجائے 100 روپے وصول کرکے سر ٹیفکیٹ دینے کا انکشاف
ویکسنیشن نہ ہونے سے شہر میں کانگو وائرل پھیلنے لگا‘ مویشی منڈی میں زائد المیعاد ادویات کی بھرمار ہوگئی‘ جانوروں پر ہاتھ پھیرنے سے گریز کا مشورہ
کراچی( مارکیٹ رپورٹر) قربانی کیلئے لائے گئے مویشیوں کی ویکسینیشن نہ ہونے سے شہر میں کانگو وائرل کے خطرات بڑھ گئے ہیں‘ منڈی میں ویٹنری کلینکس میں زائد المیعاد ادویات اور انجکشن کا استعمال عام ہے‘ ویٹنری ڈاکٹروں کے روپ میں غیر مستند اور جعلی ڈاکٹر مویشیوں کے علاج کی آڑ میں تاجروں اور عوام کو لوٹنے میں مصروف ‘ ڈسٹرکٹ ملیر بلدیہ کی جانب سے قربانی کے جانوروں کی جانچ پڑتال کیلئے قائم چوکی پر فی جانور کلیئرنس کی فیس 50روپے مقرر ہے جبکہ تاجروںسے100 روپے فی جانور وصول کرکے انہیں مویشی کے صحت مند ہونے کاسرٹیفکیٹ دیئے جارہے ہیں‘ جبکہ مویشی میں کانگوں وائرل کی موجودگی کے شبہات محکمہ لائیو اسٹاک کی جانب سے پہلے ہی ظاہر کئے جاچکے ہیں۔ طبی ماہرین نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ مویشیوں میں کانگو وائرل کے خطرات اپنی جگہ قام ہیں‘ مویشیوں کی ویکسینیشن نہ ہونے سے کانگو بخار کے خطرات کے تدارک کیلئے بلدیہ کراچی کی جانب سے کوئی اسپرے مہم نہیں کی گئی ماہرین نے خریداروں کو مشوہ دیا ہے کہ وہ جانوروں پر ہاتھ پھیرنے سے گریز کریں اپنے ہاتھوں کو اچھی طرح دھوئیں‘ قربانی کے وقت زخم آنے کی صورت میں فوری احتیاطی تدابیر کریں۔

Tags: