ٹریفک پولیس کو630 بلٹ پروف جیکٹس فراہم کردی ہیں

September 16, 2015 4:01 pm0 commentsViews: 25

کراچی( کرائم رپورٹر) پولیس کی جانب سے630 بلٹ پروف جیکٹس ٹریفک پولیس کو دی گئی ہیں۔ ٹریفک پولیس کے پاس اسلحے کے حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ ان کے پاس 93 ایس ایم جیز‘ 25 نائن ایم ایم پستول ہیں اور ایس ایم جیز 1990 کی دہائی کی ہیں۔ ٹریفک پولیس کے اہلکاروں کو ایس ایس یو اور ریپڈ رسپانس فورس کے اہلکاروں کی طرز کی ٹریننگ دینے پر بھی غور کیا جارہا ہے‘ کیماڑی حملے کے حوالے سے ذرائع کا کہنا ہے کہ عینی شاہدین کی مدد سے ملزموں کے خاکے تیارکئے جارہے ہیں۔

ٹریفک پولیس پر ہونیوالے حملوں
میں ایک ہی گروپ ملوث
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ایک ماہ کے دوران ٹریفک پولیس پر ہونیوالے حملوں میں ایک ہی گروپ کے ملوث ہونے کا انکشاف ہوا ہے‘ ڈاکس کے علاقے ایم ٹی خان روڈ پر ٹریفک پولیس کے 2 اہلکاروں پر حملے کے بعد تفتیشی افسران کا کہنا ہے کہ جس طرز کا حملہ کیا گیا اسی طرز کے حملے گلشن اقبال‘ صدر اور سائٹ میں کئے گئے تھے ملزمان نے ایک ہی اسلحہ استعمال کیا ‘ جس سے یہ اندازہ لگایا جاسکتاہے کہ واردات میں ایک ہی گروپ ملوث ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ٹریفک پولیس کو اس لئے ٹارگٹ کیا جارہا ہے کیوں کہ وہ سافٹ ٹارگٹ ہیں۔

ٹریفک اہلکاروں کی سیکورٹی کیلئے رینجرز تعینات ہوگی
ڈی آئی جی ٹریفک نے سیکورٹی دینے اور حملوں سے بچنے کیلئے رینجرز سے ٹریفک اور اسنیپ چیکنگ کی درخواست کردی
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ڈی آئی جی ٹریفک نے ٹریفک اہلکاروں کو دوران ڈیوٹی سیکورٹی دینے اور حملوں سے بچانے کیلئے ڈی جی رینجرز سے رینجرز کی پیٹرولنگ اور اسنیپ چیکنگ کی درخواست کردی ہے‘ تفصیلات کے مطابق ڈی آئی جی ٹریفک ڈاکٹر امیر شیخ کی جانب سے ڈی جی رینجرز سندھ کو ایک خط ارسال کیا گیا جس میں درخواست کی گئی ہے کہ وہ اپنے ونگ کمانڈرز کو ہدایت دیں کہ شہر بھر میں ٹریفک پولیس کے ڈیوٹی پوائنٹس کے اطراف اسنیپ چیکنگ اور پیٹرولنگ کا عمل کریں‘ اس سلسلے میں رینجرز ترجمان سے رابطہ کرنے کی کوشش کی گئی‘تاہم رابطہ ممکن نہ ہوسکا‘ ذرائع کے مطابق شہر میں جاری آپریشن کے دوران ٹریفک پولیس اہلکاروں پر حملوں میںنئی لہر کے بعد یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ ٹریفک پولیس اہلکاروں کی ڈیوٹی کے دوران رینجرز پیٹرولنگ سے موثر نتائج سامنے آسکتے ہیں۔

Tags: