حراست میں ملزم کی ہلاکت پر سکھن تھانے کے اہلکاروں کے خلاف مقدمہ درج

September 16, 2015 4:09 pm0 commentsViews: 34

ملزم نے عدالت سے ضمانت قبل از گرفتاری حاصل کی ہوئی ہے، اس وجہ سے گرفتار نہیں کیا جا سکا
کراچی( کرائم رپورٹر)سکھن پولیس نے دوران حراست ملزم کی ہلاکت کا مقدمہ عدالت کے حکم پر اپنے ہی افسر اور ساتھیوں کے خلاف درج کرلیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق سکھن انویسٹی گیشن پولیس کے ہاتھوں ماہ جون میں زیر حراست ملزم اسد جاں بحق ہو گیا ،جس پر اہل خانہ نے اعلی عدلیہ سے رجوع کرتے ہو ئے پولیس کے خلاف کارروائی کی درخواست کی تھی ،ڈی ایس پی سکھن محمد اقبال نے بتایا کہ عدالت کے حکم پر سکھن تھانے میں سب انسپکٹر ظفر اقبال ، چوہدری شبیر،رانا ماجد ،صغیر اور فقیرحسین کے خلاف قتل کا مقدمہ نمبر 251/14درج کر لیا ہے تاہم ملزمان نے عدالت سے ضمانت قبل از وقت گرفتاری حاصل کی ہو ئی ہے جس پر ملزمان کو پولیس گرفتار نہیں کرسکی ہے ،پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ حراست میں جاں بحق ہونے والا ملزم اسد گزشتہ دنوں سکھن کے علاقے میں فائرنگ سے جاں بحق ہونے والے ڈاکٹر عباس کا ملازم تھا ۔

پولیس اہلکاروں کے قاتلوں کی
عدم گرفتاری پر ایس ایچ ایس او
کی تنزلی معطل بھی کردیا گیا
کراچی( کرائم رپورٹر)ڈی آئی جی ایسٹ نے کورنگی میں قتل ہو نے والے4پولیس اہلکاروں کے قاتلوں کی عدم گرفتاری پر ایس ایچ او کو تنزلی کے بعد معطل کردیا ۔تفصیلات کے مطابق ڈی آئی جی ایسٹ امیر شیخ نے ایک حکم نامے کے تحت ایس ایچ او زمان ٹان انسپکٹر راجہ طارق کو ایک درجہ تنزلی کرتے ہو ئے سب انسپکٹر کردیا اور معطل کرنے کے احکامات جاری کردئیے۔

Tags: