کراچی میں عیدالاضحی پر بڑی دہشت گردی کا منصوبہ تحریک امارات اسلامیہ افغانستان کا سربراہ گرفتار

September 18, 2015 4:09 pm0 commentsViews: 23

عمرحیات عرف معاویہ کی گرفتاری اورنگی ٹائون سے عمل میں آئی، قبضے سے دو خودکش جیکٹس اور بم برآمد، ملزم نے کامرہ ایئربیس پر حملے کا منصوبہ بنایا تھا اور خودکش بمباروں کو پنجاب بھیجا تھا
کراچی میں عید کے اجتماع میں بڑی کارروائی کی منصوبہ بندی کررہے تھے، ملزم کا گروہ15سے20 افراد پرمشتمل ہے، کراچی میں اس کے 7ساتھی موجود ہیں جو حساس مقامات پر حملوں کی منصوبہ بندی کررہے ہیں، ایس ایس پی جنید شیخ
کراچی (کرائم رپورٹر) کاوئنٹر ٹیررازم ڈپارٹمنٹ IIکی ٹیم نے کارروائی کرتے ہوئے تحریک امارات اسلامیہ افغانستان کراچی کے سربراہ کو گرفتار کرلیا، ملزم نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ اسکے ساتھیوں نے عیدالاضحی پر دہشتگردی کا بڑا منصوبہ بنایا ہوا تھا۔ ایس ایس پی سی ٹی ڈی IIجنید شیخ نے اپنے دفتر میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ سی ٹی ڈی کی ٹیم نے خفیہ اطلاع پر اورنگی ٹائون ایم پی آر کالونی میں کارروائی کرتے ہوئے تحریک امارات اسلامیہ افغانستان کرچی کے امیر عمر حیات عرف معاویہ عرف درویش کو گرفتار کر کے اسکے قبضے سے دو تیار خود کش جیکٹس اور دو ڈبہ بم برآمد کرلیے ، انہوں نے بتایا کہ ملزم نے چند عرصہ قبل کامرہ ائیر بیس پر حملے کا منصوبہ بنایا تھا اور اس سلسلے میں اس نے دو خودکش بمباروں کو تیار کر کے پنجاب بھیجا تھا تاہم وہاں قانون نافذ کرنے والے اداروں کو چاق و چوبند پا کر دونوں خود کش بمبار راز گل اور تاج محمد کارروائی نہیں کر پائے اور واپس آگئے پھر ملزمان کراچی آئے اور کراچی میں عید الاضحی کے عید گاہ اجتماع پر بڑی کارروائی کی منصوبہ بندی کررہے تھے ۔ایس ایس پی جنید شیخ کے مطابق ملزم کا گروہ15سے20افراد پر مشتمل ہے اور اس وقت بھی کراچی میں اسکے 7ساتھی موجود ہیں جو حساس مقامات پر حملوں کی منصوبہ بندی کررہے ہیں ، انہوں نے بتایا کہ ملزم خود کش بمبار تیار کرنے کا ماسٹر مائنڈ ہے اور اسکے ساتھ ساتھ وہ بم بنانے کا بھی ماہر ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ملزم نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ قبائلی علاقہ جات میں فوجیوں پر حملے میں ملوث رہا ہے اور اسکے نتیجے میں 15فوجی شہید ہوگئے تھے جبکہ تین ماہ قبل پشاور میں پولیس پارٹی پر حملے میں بھی یہ ہی گروپ ملوث ہے جس میں ایک ایس ایچ او اور اہلکار شہید ہوئے تھے ۔ جنید شیخ نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ ابھی تک مذکورہ گروپ کا داعش سے وابستگی کا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے تاہم دیگر کالعدم تنظیموں سے انکے روابط رہے ہیں اور اسکے مزید ساتھی شہر میں روپوش ہیں جن میں وہ دو خود کش بمبار بھی شامل ہیں جو کامرہ ائیر بیس پر حملے کے لیے بھیجے گئے تھے انکی تلاش میں چھاپے مار کارروائیاں جاری ہیں ۔

Tags: