ایوان صدر اور وزیراعظم ہائوس کے اخراجات میں 50کروڑ کا گھپلا

September 22, 2015 1:04 pm0 commentsViews: 26

سابق وزیر اعظم پرویز اشرف کے دور میں 20 کروڑ روپے سے زائد کی رقم اعزازیہ کے طور پر دی گئی
ایوان صدر نے 20 کروڑ 70 لاکھ روپے کی بے ضابطگیاں کیں‘ آڈٹ رپورٹ‘ اعزازیہ دینے کی روش فوری ختم کرنے کا مطالبہ
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) ایوان صدر اور وزیر اعظم ہائوس کے اخراجات میں50 کروڑ کی بے ضابطگیوں کی نشاندہی ہوئی ہے‘ بے ضابطگیوں کی نشاندہی2013-2014 کی آڈٹ رپورٹ میں کی گئی ہے‘ نجی ٹی وی کے مطابق وزیراعظم ہائوس کا صرف پبلک ونگ کی رپورٹ آڈٹ کا حصہ ہے‘ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم ہائوس کے ملازمین کو 2012-2013 ء میں3کروڑ 20لاکھ روپے کے اعزازیئے دیئے گئے‘ آڈٹ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ وزیراعظم ہائوس کی طرف سے اعزازیہ دینا بے ضابطگی ہے‘ ایوان صدر اور وزیراعظم کی طرف سے اعزازیہ دینے کی روایت فوری ختم کی جائے‘ رپورٹ میں انکشاف کیاگیا ہے کہ سابق وزیر اعظم پرویز مشرف کے دور میں اعزازیئے کے طور پر 20کروڑ روپے سے زیادہ کی ادائیگیاں ہوئیں‘ ایوان صدر نے20کروڑ70لاکھ روپے کی بے ضابطگیاں کیں‘ ایوان صدر میں ڈسپنسری بنانے اور لان کی تزئین و آرائش پر 2کروڑ 42لاکھ روپے خرچ ہوئے‘ سابق صدر کے سیکریٹری جنرل سلمان فاروقی کو1کروڑ64لاکھ روپے ادائیگی بے ضابطگی ہے‘ آڈٹ رپورٹ میں سلمان فاروقی سے ایک کروڑ64لاکھ روپے وصول کرنے کی سفارش کا بھی ذکر کیا گیا ہے۔

Tags: