MPA علی نواز شاہ‘ خادم حسین اور امتیاز علی کی سزائیں معطل

September 22, 2015 2:37 pm0 commentsViews: 22

پی پی کے رکن سندھ اسمبلی علی نواز شاہ اور دیگر 2 افراد کے خلاف ایل بی او ڈی میں کرپشن کرنے کے الزامات تھے
گرفتاری نیب کے دائرہ اختیار میں نہیں آتی‘ اہلیہ علی نواز شاہ، سندھ ہائی کورٹ نے فی کس 5 لاکھ روپے کی ضمانت منظور کرلی
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ ہائی کورٹ نے پی پی پی کے رکن صوبائی اسمبلی اور سابق وزیر علی نواز شاہ، سابق رکن صوبائی اسمبلی خادم حسین شاہ اور امتیاز علی شاہ کی سزائوں کے خلاف دائر بریت کی درخواست پر ماتحت عدالت سے ملنے والی سزائوں کو معطل کر دیا ہے فاضل عدالت نے تینوں کی فی کس 5 لاکھ روپے کی ضمانت بھی منظور کر لی ہے۔ پیر کو جسٹس احمد علی ایم شیخ پر مشتمل بنچ نے علی نواز شاہ کو کرپشن کے مقدمے میں ملنے والی سزائوں کے خلاف ان کی اہلیہ مسماۃ علی نواز شاہ و دیگر کی جانب سے دائر کر دہ بریت کی درخواست کی سماعت کی۔ سماعت کے موقع پر وکلاء کی جانب سے دلائل دئیے گئے درخواست گزاروں نے اپنے وکلاء کے توسط سے دائر کر دہ درخواستوں میں موقف اختیار کیا کہ علی نواز شاہ کو نقصان پہنچانے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا جو کہ نیب کے قوانین کے تحت ان کے دائرہ اختیار میں نہیں آتا۔ لہٰذا استدعا ہے کہ ماتحت عدالت سے ملنے والی سزائوں کو کالعدم قرار دیتے ہوئے بری کیا جائے۔ واضح رہے کہ احتساب عدالت نے تینوں ملزمان کو بالترتیب 4,3 اور 5 سال اور جرمانے کی سزائیں سنائی تھیں جو عدالت عالیہ کی جانب سے معطل کر دی گئی ہیں ذرائع کے مطابق تینوں ملزمان پر خریداری میں کرپشن کا الزام تھا ملزموں نے زمینوں کی خریداری میںمبینہ طور پر کرپشن کی تھی نیب کورٹ نے تینوں ملزمان کو سزا سنائی تھی۔

Tags: