زرداری میرے اور غنویٰ کے سوالوں کے جواب دیں، ممتاز بھٹو

September 22, 2015 2:40 pm0 commentsViews: 27

بتایا جائے کہ زرداری نے مرتضیٰ کے قتل سے ایک رات پہلے قاتل پولیس اہلکاروں سے ملاقات کیوں کی تھی
زرداری بتائیں کہ اگر میر مرتضیٰ بھٹو زندہ ہوتے تو کیا وہ ملک کے صدر بن سکتے تھے؟
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما اور سابق وزیر اعلیٰ سندھ سردار ممتاز علی بھٹو نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سالوں بعد دبئی میں مقیم زرداری نے شہید مرتضیٰ بھٹو کے قتل کے بارے میں منہ کھولا ہے۔ اسے چاہئے کہ سب سے پہلے ان سوالات کا جواب دے جو محترمہ غنویٰ بھٹو نے اٹھائے ہیں اس کے بعد میرے بھی سوالات ہیں کہ قاتل پولیس اہلکاروں سے زرداری نے میر مرتضیٰ بھٹو کے قتل سے ایک رات پہلے وزیر اعلیٰ ہائوس کراچی میں ملاقات کیوں کی تھی اور اس میں کون سے فیصلے ہوئے تھے۔ دوسرا یہ کہ اس وقت کے ڈی آئی جی پولیس سائوتھ شعیب سڈل کو جب ایس پی واجد درانی نے قتل کی اطلاع دی تو شعیب سڈل نے یہ کیوں کہاکہ اب اسلام آباد والے خوش ہوں گے اور وہ اسلام آباد والے کون تھے۔ اس کے علاوہ ایس ایچ او حق نواز کو واقعے کے بعد ایسے قتل کیا گیا جیسے شہید بے نظیر کے قتل کے بعد خالد شہنشاہ کو مارا گیا۔ اس قتل کا اب عذیر بلوچ نے اعتراف کیا ہے کہ زرداری کے حکم پر قتل کیا ہے۔ زرداری یہ بھی بتائیں کہ اگر شہید میر مرتضیٰ زندہ ہوتے تو کیا یہ ملک کا صدر اور پیپلز پارٹی کے رہنما ہو سکتے تھے۔ زرداری سے یہ بھی پوچھنا لازم ہے کہ وہ یا کوئی سندھی ایسا ہے جو سیاسی اور ذاتی مفاد کی خاطر باپ کو بھلا کر ماں کے نام پر چلتا ہو۔

Tags: