نیب کا خوف: سندھ حکومت نے ہزاروں ایکڑ زمین کی الاٹمنٹ منسوخ کردی

September 23, 2015 2:39 pm0 commentsViews: 48

ملیر ندی سمیت 17 کیسز کے تحت الاٹ کردہ 1652 ایکڑ اراضی کی الاٹمنٹ منسوخ کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا
خلاف ضابطہ معمولی قیمتوں کی زمینوں کے بدلے ماضی میں انتہائی قیمتی زمین من پسند لوگوں کو الاٹ کردی گئی تھی
کراچی( نیوز ایجنسیاں) حکومت سندھ نے نیب کی کارروائی سے بچنے کیلئے تبادلے کے قانون کے غلط استعمال کے تحت معمولی قیمت والی زمینوں کے بدلے دی گئی ہزاروں ایکڑ قیمتی زمین کی الاٹمنٹ منسوخ کر نے کا نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔ ملیر ندی سمیت17 کیسز کے تحت الاٹ کر دہ652 ایکڑ اراضی کی الاٹمنٹ بھی منسوخ کر دی گئی۔ ساڑھے 9 ہزار ایکڑ اراضی الاٹمنٹ منسوخ کرنے کے متعلق تقریباً 160 سمریوں پر فیصلہ باقی ہے۔ با خبر ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعلیٰ سندھ کی منظوری کے بعد محکمہ لینڈ اینڈ یوٹیلائزیشن نے منگل کو جاری نوٹیفکیشن کے تحت صوبے کے تمام29 اضلاع کے ڈپٹی کمشنرز اور6 ڈویژن کے کمشنرز کو گزشتہ14 برس میں کراچی سمیت صوبے بھر میں کانولائزیشن آف گورنمنٹ ( سندھ) لینڈ ایکٹ مجریہ 1912 کے سیکشن 17 کے تحت بدلنے میں کی گئی تمام زمینوں کی الاٹمنٹ منسوخ کرکے فہرستیں فوری طور پر محکمہ بورڈ آف ریونیو کو ارسال کر نے کی ہدایت کی ہے۔ نوٹیفکیشن میں کمشنر اور ڈپٹی کمشنر پر واضح کیا گیا ہے کہ تبالے کی زمینوں کی منظوری خواہ کمشنرز، سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو، حتیٰ کہ وزیر اعلیٰ سندھ نے ہی کیوں نہ دی ہو ان تمام زمینوں کی الاٹمنٹ منسوخ کی جائے۔

Tags: