مسجد ابراہیمی میں شر پسند یہودیوں کی رقص اور موسیقی کی محفل

September 23, 2015 3:07 pm0 commentsViews: 43

اسرائیلی فوج کی فول پروف سیکورٹی میں یہودی آباد کاروں نے مسجد کے اندر مذہبی رسومات بھی ادا کی
فلسطینیوں میں سخت اشتعال، مغربی کنارے کے گائوں میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے نوجوان شہید، جھڑپیں شروع ہوگئیں
الخلیل، رمکہ ( آن لائن) اسرائیل کے یہودی شرپسندوں نے فلسطین کے مقبوضہ مغربی کنارے میں مسلمانوں کے تاریخی مذہبی مقام مسجد ابراہیمی میں داخل ہو کر نہ صرف اس کی بے حرمتی کی بلکہ رقص اور موسیقی کی محفل بھی منعقد کر ڈالی، مقامی ذرائع نے مرکز اطلاعات فلسطین کو بتایا کہ یہودی آباد کاری کی بڑی تعداد نے مسجد ابراہیمی میں داخل ہو کر تلمودی تعلیمات کے مطابق مذہبی رسومات ادا کیں۔ اس موقع پر اسرائیلی فوج اور پولیس نے یہودی آباد کاروں کو فول پروف سیکیورٹی مہیا کر رکھی تھی اور فلسطینیوں کو مسجد میں داخل ہونے سے روک دیا گیا تھا۔ یہودیوں نے مسجد میں محفل موسیقی میں پہلی بار ایک یہودی گلوکارہ کو بھی شریک کیا گیا۔ مقبوضہ مغربی کنارے کے ایک گائوں میں اسرائیلی فوج کی فائرنگ سے ایک فلسطینی نوجوان شہید ہوگیا۔ ذرائع ابلاغ کے مطابق فلسطینی حکام نے21 سالہ نوجوان کے شہید ہونے کی تصدیق کی ہے حکام نے کہا کہ گاڑیوں میں سوار درجنوں اسرائیلی فوجی الخلیل کے ایک گائوں دوما میں گھس آئے اور زبردستی تلاشی شروع کر دی۔ اس دوران اسرائیلی فوجیوں اور فلسطینیوں میں چھڑپیں شروع ہوگئیں۔ فوجیوں نے آنسو گیس اور فائرنگ کی جس کے نتیجے میں ایک فلسطینی نوجوان شہید ہوگیا۔

Tags: