سستا بکرا نہ دینے پر پولیس نے50 بکرے ٹرین سے کٹوا ڈالے

September 24, 2015 2:52 pm0 commentsViews: 23

کانسٹیبل شبیر نے بیوپاری محمد رزاق سے بکرا مانگا تو اس نے35 ہزار قیمت بتا دی اہلکار کی15 ہزار دینے کی ضد
انکار پر پیٹی بند بھائیوں سے ملکر ریوڑ کو ریلوے ٹریک پر پھینک دیا جس کے نتیجے میں50 بکرے مارے گئے،30 زخمی ہوگئے
لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) سستا بکرا نہ دینے پر کانسٹیبل نے پیٹی بھائیوں کے ساتھ مل کر بیوپاری کے بندھے بکرے کھول کر ریلوے لائن پر چھوڑ دیئے جس سے50بکرے ہلاک اور 30 زخمی ہوگئے‘5 پولیس اہلکاروں کو معطل کرکے انکوائری شروع کردی گئی‘ بیوپاری محمد رزاق ‘محمد اشفاق کے مطابق ملحقہ پولیس چوکی جٹووکل کے کانسٹیبل شبیر نے قربانی کیلئے بکرا مانگا جس کی رقم35 ہزار بتائی مگر اس نے15ہزار میں لینے کی ضد کی‘ ہمارے انکا رپر اس نے دیگر پیٹی بھائیوں کیساتھ مل کر ہم پرتشدد کرتے ہوئے سروس موڑ پر بندھے ہمارے150 کے قریب بکرے کھول دیئے‘ اسی دوران اسلام آباد سے گجرات آنے والی ٹرین تلے 80بکرے آگئے جس کے نتیجے میں50 بکرے ہلاک اور 30 زخمی ہوگئے جنہیں ذبح کرلیا گیا‘ بیوپاریوں کے مطابق مجموعی طورپر 40سے50لاکھ کا نقصان ہوا۔ واقعے کے بعد بیوپاریوں نے شدید احتجاج کیا اور پولیس کے خلاف نعرے بازی کی‘ مظاہرین نے مردہ بکرے جی ٹی روڈ پر رکھ کر احتجاج کیا اور4گھنٹے تک نعرے بازی کی جس سے راولپنڈی ‘لاہور جانیوالی ٹریفک بلاک ہوگئی‘ مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے لیگی رہنما حاجی اورنگزیب بٹ قیادت کی ہدایت موقع پر پہنچے اور متاثرہ بیوپاریوں کو ہونیوالے تمام نقصان کی ادائیگی کرنے کی یقین دہانی کرائی جس پر مظاہرین منتشر ہوگئے۔

Tags: