نیپرا نے ملک بھر میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کو جعلی قراردیدیا نیا میٹر سسٹم بھی ناکارہ

September 29, 2015 3:49 pm0 commentsViews: 22

بجلی کی طلب اور پیداوار میں شارٹ فال اور لوڈشیڈنگ جان بوجھ کر کی جاتی رہی ہے‘ 70 فیصد صارفین کو درست بل نہیں دیئے جاتے
بعض پاور پلانٹس کی مشینیں 3 سال سے بند ہیں‘ 17 ارب روپے کے جناح ہائیڈرو پروجیکٹ میں خرابیاں پیدا ہوگئیں
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی نے بجلی کی طلب اور پیداوار کے درمیان شارٹ فال کو جعلی اور اس سلسلے میں لوڈشیڈنگ کو بھی حکام کی جان بوجھ کر کی جانیوالی کارروائی قرار دیا ہے‘ نیپر اکی سالانہ رپورٹ برائے2014-15 کے مطابق کارکردگی کی بنیاد پر آئیسکو پہلے اور کے الیکٹرک دوسرے نمبر پر ہے۔ گیپکو تیسرے‘ کیسکو چوتھے‘ فیسکو پانچویں‘ جبکہ سکھر الیکٹرک پاور کمپنی دسویں نمبر پر ہے۔ بجلی کے بلوں کے حوالے سے سالانہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ بجلی کا نیا میٹر سسٹم بھی ناکارہ ہے اور 70 فیصد صارفین کو درست بل نہیں دیئے جاتے‘ رپورٹ میں وزارت پانی و بجلی کی کارکردگی ناقص قرار دیتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ملک میں بجلی کا شارٹ فال اور لوڈشیڈنگ جان بوجھ کر کی جاتی رہی ہے‘ سرکاری تھرمل پاور پلانٹ کی انتظامیہ نے مشینوں اور پاور یونٹس کو جان بوجھ کر بند رکھا‘ بعض پاور پلانٹس کی مشینیں3 سال سے بند ہیں‘ نیپر انے دریائے سندھ پر بجلی کے پیداواری یونٹس جناح ہائیڈرو پروجیکٹ کی کارکردگی پر سوال اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ17 ارب خرچ کردینے کے باوجود منصوبے میں تکنیکی خرابیاں پیدا ہوئی‘ ادھر اے پی پی کے مطابق وزارت پانی و بجلی کے ترجمان نے کہا ہے کہ حکومت کی ٹھوس انتظامی حکمت عملی کی وجہ سے نہ صرف بجلی کی لوڈشیڈنگ کے دورانیہ میں کمی ہوئی ہے بلکہ بجلی کی پیدواری لاگت بھی کم ہوگئی ہے۔

Tags: