تاجروں کا بینک اکائونٹس بند کرنے کا اعلان ایک لاکھ روپے کا چیک نکلوانے پر 600 روپے کٹوتی ہوئی

October 1, 2015 3:24 pm0 commentsViews: 23

تاجر یہ بھول جائیں کہ ٹرانزیکشن پر ٹیکس کے نفاذ کا فیصلہ واپس لے لیا جائے گا‘ وفاقی وزیر خزانہ
حکومتی فیصلے کے خلاف ملک گیر تحریک چلائیں گے‘ جلد لائحہ عمل کا اعلان کرینگے‘ خالد پرویز
لاہور( نیوز ایجنسیاں) ملک بھر کے تاجر اور حکومت ایک بار پھر آمنے سامنے آگئے ہیں‘ حکومت نے آج سے بینکوں سے ایک لاکھ روپے نکلوانے پر0.6 فیصد ود ہولڈنگ ٹیکس نافذ کردیااجبکہ تاجروں نے7 اکتوبر سے بینکوں کے ذریعے لین دین بند کرنے اور احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کردیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق حکومتی فیصلے کے تحت ملک بھر کے بینکوں سے ایک لاکھ روپے نکلوانے پرآج سے600 روپے کٹوتی کی جائیگی‘ وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ تاجر بھول جائیں کہ ٹرانزیکشن پر ٹیکس کا فیصلہ واپس لے لیا جائیگا تاہم انہوں نے تاجروں کیلئے ٹیکس گوشوارے جمع کرانے کی مدت میں ایک ماہ کی توسیع کا اعلان کیا ہے‘دوسری جانب تاجروں نے حکومتی فیصلے کو ایک بار پھر مسترد کرتے ہوئے 7 اکتوبر سے بینکوں کے ذریعے لین دین بند کرنے کا اعلان کیا ہے‘ تاجر رہنما خالد پرویزنے کہا ہے کہ حکومت تاجروں کو تباہ کرنے پر تلی ہوئی ہے‘ انہوں نے کہا کہ ملک بھر کے تاجر 7اکتوبر سے بینکوں میں اپنے اکائونٹس بند کردیں گے‘ انہوں نے کہا کہ تاجر برادری حکومتی فیصلے کے خلاف ملک گیر احتجاجی تحریک چلائے گی اور اس کیلئے جلد لائحہ عمل کی اعلان کردیا جائیگا۔پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی جنرل سیکریٹری نعیم میر نے کہا ہے کہ یکم اکتوبر سے ود ہولڈنگ ٹیکس0.3 فیصد سے بڑھا کر 0.6فیصد کرنے کے فیصلے کی شدید مذمت کرتے ہیں۔ گزشتہ تین ماہ سے حکومت تاجروں کے ساتھ مذاق کرتی رہی ہے‘ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا مزید کہنا تھا کہ حکومت کا مراعاتی پیکیج بھی ایک ڈھونگ ثابت ہوا ہے‘ حکومت نے تاجروں کے مسائل کو حل کرنے کیلئے ایک دھیلے کا کام نہیں کیا‘ چار ہڑتالیں‘ احتجاج اور بد عائیں بھی حکومت پر اثر دکھاسکیں‘ انہوں نے کہا کہ ملک بھر کے تاجروں سے ہڑتالیں موخر کرنے اور اسلام آباد گھیرائو کرنے کا پروگرام پر جاری ہے‘ آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی عہدیدار مرکزی چیئرمین خواجہ شفیق‘ مرکزی صدر اجمل بلوچ آج یکم اکتوبر چار بجے لاہور پریس کلب میں حتمی لائحہ عمل کا اعلان کریں گے۔

Tags: