ڈاکٹر عاصم کو کراچی میں105 ایکڑ سرکاری اراضی الاٹ کرنیکا انکشاف

October 2, 2015 12:17 pm0 commentsViews: 28

پیپلزپارٹی نے95 ایکڑ اور مشرف حکومت نے10 ایکڑ اراضی فراہم کی، جعلسازی کرکے99 سالہ لیز میں تبدیلی کرائی گئی
کراچی( اسٹاف رپورٹر) پیپلزپارٹی کے سربراہ اور صوبائی ہائر ایجوکیشن کمیشن کے گرفتار سربراہ ڈاکٹر عاصم کو کراچی میں105 ایکڑ اراضی الاٹ کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے۔ جس میں95 ایکڑ پیپلز پارٹی کے دور حکومت میں جبکہ مشرف دور میں10 ایکڑ زمین الاٹ کی گئی ۔ ڈاکٹر عاصم نے مذکورہ اراضی فلاحی منصوبے کے نام پر پہلے30 سالہ لیز پر حاصل کی۔ بعد ازاں جعلسازی کرکے 99 سالہ لیز میں تبدیل کرالی گئی۔ گزشتہ روز محکمہ لینڈ یوٹیلائزیشن نے ڈاکٹر عاصم کی105 ایکڑ اراضی کا ریکارڈ نیب کو پیش کر دیا۔ ذرائع کے مطابق نیب کو فراہم کئے جانے والے زمین کے ریکارڈ کے مطابق ڈاکٹر عاصم حسین کو پیپلز پارٹی کے دور میں2009ء کا ٹھور کے قریب دیھہ چوپڑا ایجوکیشن سٹی میں ایک جگہ پر 25 ایکڑ زمین اور دوسری جگہ پر24 ایکڑ زمین سستے داموں پر 2 ہزار روپے فی ایکڑ کے حساب سے الاٹ کر دی گئی۔ اور زمین کو پہلے 30 سالہ لیز کر دیا گیا۔ بعد ازاں اس زمین کو99 سالہ لیز کر دی گئی۔ ذرائع کے مطابق پیپلزپارٹی کے دور2010 میں ضلع غربی کے علاقے دیہجام جکڑو میں ڈاکٹر عاصم کو 25 ایکڑ زمین الاٹ کر دی گئی۔ زمین کو پہلے فیز میں30 سالہ لیز دی گئی۔ بعد ازاں 99 سالہ لیز کر دی گئی۔ کورنگی ضلع میں پرویز مشرف کے دور2001میں 10 ایکڑ زمین الاٹ کر دی گئی جبکہ15 ایکڑ زمین پیپلز پارٹی کے دور2011میں الاٹ کر دی گئی۔ دونوں مقامات پر الاٹ کی جانے والی زمین کو پہلے 30 سالہ اور بعد ازاں99 سالہ لیز کر دی گئی، ذرائع کے مطابق متعلقہ زمین بھی سستے داموں مشرف دور میں ایک ہزار75 روپے فی گز کے حساب سے پیپلز پارٹی کے دور میں2 ہزار75 روپے فیک ایکڑ کے حساب سے ڈاکٹر عاصم کو دی گئی ہے۔

ڈاکٹر عاصم کے الزامات بے بنیاد ہیں، علاج معالجہ بہترین فراہم کر رہے ہیں، رینجرز

کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ ہائی کورٹ میں رینجرز کے کرنل امجد نے حلف نامہ جمع کراتے ہوئے کہا کہ ہم پر ڈاکٹر عاصم حسین کی جانب سے علاج معالجے کی سہولت فراہم نہ کرنے کے الزامات بے بنیاد اور جھوٹے ہیں۔ کرنل امجد نے عدالت کو بتایا کہ رینجرز ڈاکٹر عاصم کو بہترین علاج معالجے کی سہولیات فراہم کر رہا ہے۔ ہمارے پاس جدید آلات اور سہولیات موجود ہیں۔ گزشتہ روز سندھ ہائی کورٹ میں ڈاکٹر عاصم حسین کی جانب سے علاج معالجے کی سہولیات کی عدم فراہمی کے حوالے سے کیس کی سماعت کے دوران رینجرز نے جواب داخل کیا۔ جبکہ عدالت نے ڈاکٹر عاصم کے وکیل کی جانب سے جواب الجواب داخل کرانے کیلئے مہلت مانگنے پر کیس کی سماعت 13 اکتوبر تک ملتوی کر دی۔

 

 

Tags: