بینظیر نے کہا تھا مجھے کچھ ہوا تو مشرف ذمہ دار ہونگے، امریکی صحافی مارک سیگل

October 2, 2015 12:15 pm0 commentsViews: 20

مشرف نے کہا تھااگر بینظیرالیکشن سے پہلے واپس آئیں تو زندگی کی گارنٹی نہیں ہے
پاکستان میں بینظیر کی سیکورٹی صرف مشرف سے اچھے تعلقات کے نتیجے میں تھی
بینظیرنے مجھے مشرف کا خط دکھایا اور سیکورٹی خدشات سے مجھے آگاہ کیا تھا
ای میل میں بینظیر نے اس خدشے کااظہار کیا تھا کہ پاکستان میں انہیں ماردیاجائے گا
بینظیر کو وہ تحفظ نہیں دیا گیا جس کا وہ استحقاق رکھتی تھیں، وڈیو لنک پر بیان
مارک سیگل بینظیر کی ای میل کاذکر کرتے ہوئے رو پڑے، آبدیدہ ہونے پر سماعت روک دی گئی
راولپنڈی ( مانیٹرنگ ڈیسک) امریکی صحافی مارک سیگل نے بے نظیر بھٹو قتل کیس میں اپنا ویڈیو بیان ریکارڈ کرا دیا۔ پرویز مشرف کے وکیل الیاس صدیقی نے کہا مارک سیگل کا جھکائو بے نظیر کی طرف ہے۔ بیان ریکارڈ نہ کیا جائے جس پر پرویز مشرف کے وکیل کا اعتراض مسترد کر دیا گیا۔ مارک سیگل نے کہا کہ میں نے مسز ٹائم سے کہا کہ بے نظیر کو فون سننے کیلئے پرائیویسی چاہئے، مسز ٹائم نے بے نظیر کو فون سننے کیلئے علیحدہ کمرہ دیا۔ بے نظیر 6 یا7 منٹ بعد باہر آئیں تو کافی پریشان تھیں۔ میں نے وجہ پوچھی تو کہا کہ بعد میں بتاتی ہوں۔ اسی دوران سینیٹر بھی آگئے15 سے20 منٹ ہماری سینیٹر سے ملاقات ہوئی۔ واپسی پر بے نظیر نے مجھے بتایا کہ مشرف کی بری کال تھی۔ انہوں نے بتایا کہ کال پر پرویز مشرف کا رویہ انتہائی غصیلہ اور برا اور دھمکیوں سے بھرا تھا۔ بینظیر نے کہا تھا کہ مجھے کچھ ہوا تو ذمہ دار پرویز مشرف ہوں گے۔ مارک سیگل کا کہنا تھا کہ مشرف2008ء کے الیکشن میں بے نظیر کی واپسی کے خلاف تھے۔ مشرف نے بی بی کو کہا کہ اگرالیکشن سے پہلے آئیں تو زندگی کی گارنٹی نہیں ہے۔ سیکورٹی کی گارنٹی صرف مشرف حکومت سے اچھے تعلقات پر تھی۔ اس کے بعد بے نظیر امریکہ سے دبئی چلی گئیں۔ میری دبئی میں بھی بے نظیر سے ملاقات ہوئی۔ وہاں ان سے انتخابات اور پاکستان کی واپسی پر گفتگو ہوئی۔ بے نظیر نے مجھے مشرف کو خط اور سیکورٹی خدشات سے آگاہ کرنے کا بتایا۔ بے نظیر نے مشرف کو بتایا کہ میں18 اکتوبر کو ہر صورت وطن واپس آرہی ہوں، 23 ستمبر2007ء کو بے نظیر سے میری آخری بار بات میری سالگرہ پر ہوئی ان کا فون آیا تھا۔ 26 اکتوبر کو بے نظیر نے مجھے ای میل کی جس میں انہوں نے کہا کہ اگر مجھے کچھ ہوگیا تو ذمہ دار مشرف ہوں گے اور مجھے کچھ ہوجائے تو یہ ای میل اوپن کر دینا۔ مارک سیگل بے نظیر کی ای میل کا ذکر کرتے ہوئے رو پڑے۔ مارک سیگل کے آبدیدہ ہونے پر سماعت کچھ دیر کیلئے روک دی ۔ سماعت دوبارہ شروع ہوئی تو مارک سیگل نے کہا بے نظیر نے ای میل میں ہی خدشے کا اظہار کیا تھا انہیں مار دیا جائیگا۔ میں نے بے نظیر کی ای میل نمائندہ سی این این وولف والٹرز کو بھیج دی اور انہیں کہا کہ یہ میل امانت ہے اگر بے نظیر کو کچھ ہوجائے تو یہ میل اوپن کر دینا۔ بے نظیر کی شہادت کے بعد نمائندہ سی این این کا میرے پاس فون آیا اور میں نے انہیں ای میل اوپن کرنے کی اجازت دے دی۔ مارک سیگل کا کہنا تھا کہ بے نظیر کو وہ تحفظ نہیں دیا جس کا وہ استحقاق رکھتی تھیں۔

Tags: