مسکراہٹ کا عالمی دن زندگی سے مایوس لوگوں کے ہمراہ منانا چاہیے، صارم برنی

October 3, 2015 2:26 pm0 commentsViews: 20

آج کے افراتفری کے دور میں ہمیں اپنے ہی لوگوں کو یا د رکھنے کی ضرورت ہے، جن کے چہروں پر مسکراہٹ ناپید ہو چکی ہے
کراچی( پ ر) مسکراہٹ کے عالمی دن کو ہمیں ایسے بچوں اور زندگی سے مایوس لوگوں کے ساتھ منانا چاہئے۔ جو اپنی خوشیوں اور زندگی سے مایوس ہو چکے ہیں۔ تا کہ ان میں زندگی کی طرف لوٹنے اور اپنی زندگی کے مقصد پانے کی رمق بیدار ہو ان خیالات کا اظہار حقوق انسانی کی تنظیم صارم ویلفیئر ٹرسٹ انٹر نیشنل کے چیئر مین نے مسکراہٹ کے عالمی دن پر کیا اور لوگوں سے اپیل کی کہ جن کے چہروں پر فکروں، پریشانیوں اور غربت کے باعث مسکراہٹ نا پید ہو چکی ہے۔ ہمیں ان کے چہروں پر مسکراہٹوں کو واپس لانا ہوگا، صارم برنی نے مزید کہا کہ اس دوڑتی بھاگتی زندگی افراتفری میں ہم لوگ انہیں بھول گئے ہیں جنہیں آج ہماری سب سے زیادہ ضرورت ہے۔ جس طرح گزشتہ دن بزرگوں کا عالمی دن منایا گیا اسی طرح آج کا دن بھی گزر جائے گا اور یہ روایت ہمارے یہاں عام ہے کہ ہم ایسے دنوں کو بڑے دھوم دھام سے مناتے ہیں اور بہت لمبی لمبی تقریریں بھی کرتے ہیں بزرگوں، بچوں اور عورتوں سمیت دونوں کی مناسبت سے خوب تصویر کھنچواتے ہیں مگر جب وقت عمل کرنے کا آتا ہے تو اپنے ہی ادا کئے ہوئے لفظوں کو بھول جاتے ہیں انہوں نے کہا کہ ہمیں یہ دن منانے کی حد تک نہیں بلکہ اپنے عمل کے حوالے سے یاد رکھنا چاہئے۔