نجی اسکولوں کی جانب سے اضافی فیسوں کی وصولی روکنے کیلئے حکومت سرگرم

October 3, 2015 2:49 pm0 commentsViews: 182

ڈی جی پرائیویٹ اسکولز کی سربراہی میں پانچ رکنی مانیٹرنگ ٹیم پیر سے اسکولوں کا دورہ کرکے زائد فیسوں کی وصولی کے بارے میں معلومات کرے گی
جو اسکول زیادہ فیس وصول کرے گا‘ اس کی رجسٹریشن منسوخ کردی جائیگی‘ صوبائی وزیرتعلیم کا پریس کانفرنس سے خطاب
کراچی ( اسٹاف رپورٹر) سندھ کے سینئر وزیر تعلیم نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ نجی اسکولوں کی جانب سے اضافی فیس وصولی کے عمل کو روکنے کیلئے فیصلہ کیا گیا ہے کہ نجی اسکولز پانچ سے دس فیصد فیس اضافہ ڈائریکٹریٹ پرائیوٹ اسکولز کی اجازت کے بغیر نہیں کر سکیں گے۔ اور جن اسکولوں نے ماہ اگست اور ستمبر میں دس فیصد سے زائد فیس وصولی کیلئے چالان جاری کئے ہیں وہ نجی اسکولز وصول کی گئی اضافی فیس ماہ اکتوبر سے ایڈ جسٹ کر نے کے پابند ہوں گے۔ اور رواں ماہ اکتوبر سے کسی بھی نجی اسکول کو اجازت کے بغیر دس فیصد سے زائد فیس وصول کرنے کیلئے چالان جاری کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جمعہ کو سندھ اسمبلی میں واقع اپنے دفتر میں نجی اسکولوں کی فیس سے متعلق اجلاس کے بعد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ نثار کھوڑو نے کہا کہ ڈی جی پرائیوٹ اسکولز کی سربراہی میں پانچ رکنی مانیٹرنگ کمیٹی تشکیل دی گئی۔ جو پیر سے نجی اسکولوں کا دورہ کرکے اس بات کو یقینی بنائے گی کہ کوئی بھی نجی اسکولز بغیر اجازت دس فیصد سے زائد فیس کا چالان جاری نہ کر سکے اور اگر کسی نجی اسکول نے اس عمل کی خلاف ورزی کی تو اس کی رجسٹریشن منسوخ کر دی جائے گی۔ اسکولز کے دفتر میں شکایتی سیل قائم کیا گیا ہے اور عوامی شکایت پر نجی اسکول کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

Tags: