منی لانڈرنگ کیس‘ الطاف حسین سے طویل تفتیش‘ ضمانت میں توسیع

October 6, 2015 4:11 pm0 commentsViews: 22

منی لانڈرنگ کیس کی تحقیقات کرنے والے اسپیشل یونٹ نے متحدہ کے قائد سے 4 گھنٹے تک مختلف سوالات کئے
الطاف حسین کی ضمانت میں فروری 2016 تک توسیع کی گئی‘ پیشی کے موقع پر پولیس اسٹیشن کے باہر معمول سے زیادہ سیکورٹی تھی‘ بی بی سی
لندن( نیوز ڈیسک) منی لانڈرنگ کیس میں متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین کی ضمانت میں فروری2016 ء تک توسیع کردی گئی ۔ لانڈرنگ کیس میں متحدہ قومی موومنٹ کے قائد الطاف حسین کی سینٹرل لندن کے سدک پولیس اسٹیشن میں پیشی ہوئی جہاں ان سے اسکاٹ لینڈ یارڈ کے تحقیقاتی افسران نے منی لانڈرنگ کیس سے متعلق سوالات کئے‘ برطانوی وقت کے مطابق صبح9بجے پولیس اہلکار ان کی رہائش گاہ کے سامنے پہنچ گئے اور انہیں اپنی نگرانی میں سینٹرل لندن کے سدک پولیس اسٹیشن پہنچایا‘ ان کے ہمراہ ایم کیو ایم کے رہنما ڈاکٹر فاروق ستار‘ بابر غوری‘ بیرسٹر سیف‘ فروغ نسیم‘ محمد انور‘ واسع جلیل اور وکلاء کی ٹیم موجود تھی‘ الطاف حسین اپنے وکلاء کے ساتھ پولیس کی نگرانی میں پولیس اسٹیشن داخل ہوئے جہاں مقررہ وقت ختم ہونے پر انہیں حراست میں لیا گیا‘ الطاف حسین سے منی لانڈرنگ کیس کی تحقیقات کرنے والے اسپیشل یونٹ نے4 گھنٹے تک مختلف سوالات کئے اور ان کی ضمانت میں فروری 2016 ء تک توسیع کرکے گھر جانے کی اجازت دے دی۔ دوران تفتیش الطاف حسین کو بریک دی گئی اور اس دوران ناشتہ اور جوسز بھی دیئے گئے‘ بی بی سی کے مطابق الطاف حسین کی پیشی پر پولیس اسٹیشن کے باہر معمول سے زیادہ سیکورٹی تھی‘ الطاف حسین سے3 پولیس افسران نے منی لانڈرنگ اور ڈاکٹر عمران فاروق قتل کیس میں ساڑھے3 گھنٹے تک پوچھ گچھ کی‘ لندن پولیس کو پراسیکیوشن کیلئے100 فیصد ثبوت چاہئے۔اس لئے الطاف حسین پر فرد جرم عائد نہ کرکے تیسری بار ضمانت میں توسیع کی منظوری دے دی گئی۔

Tags: