پاکستان میں28 لاکھ بزرگ شہری بنیادی حقوق سے محروم

October 7, 2015 3:45 pm0 commentsViews: 31

محرومیوں کو دور کرنے کیلئے اجتماعی جدوجہد کی ضرورت ہے، سمیع صدیقی، جاوید جبار و دیگر کا خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) بزرگ شہری توجہ و احترام کے بجا طور پر مستحق ہیں لیکن مجموعی طور پر وہ سوسائٹی میں اپنے مقام سے یکسر محروم ہیں جو الارمنگ صورتحال ہے۔ دارلسکون کی خدمت کا انداز دوسرے اداروں سے بالکل مختلف ہے۔ اس طرح کے ادارے بہت کم ہیں۔ ان کے ساتھ ہر طرح پر معاونت کی جانی چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار میونسپل کمشنر کے ایم سی سمیع الدین صدیقی نے گذشتہ روز مقامی ہوٹل میں دارالسکون کے تحت بزرگ شہریوں کے عالمی دن کے حوالے سے منعقدہ آگہی سیمینار ’’کمزوروں کی آواز‘‘ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر سابق وفاقی وزیر جاوید جبار، ایئر کموڈور(ر) بشیر اے خان دارلسکون کی ڈائریکٹر سسٹر رُتھ لیوس، عورت فائونڈیشن کی چیئر پرسن مہناز رحمان، بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام کی ڈائریکٹر نویدہ ارم وارثی، مورس خورشید، مسٹر جانسن ہینس اور انور حسین صدیقی نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ سیمینار میں بانی ایم اے ایل سی ڈاکٹر رتھ، ریاض فاطمہ، غلام کبریا و دیگر بھی موجود تھے۔ سمیع الدین صدیقی نے کے ایم سی کی جانب سے دارالسکون کے لیے2 لاکھ روپے کے عطیہ کا اعلان کیا۔ جاوید جبار نے کہا کہ ملک کے 28 لاکھ ضعیف افراد بنیادی حقوق سے محروم ہیں۔ اس سلسلہ میں اجتماعی سعی و جہد ہونی چاہئے۔ ادارے کی ڈائریکٹر سسٹر رُتھ لیوس نے کہا کہ ورلڈ ایلڈرزڈے ہمیں یاد دلاتا ہے کہ ہم اپنے بڑوں پر نظر دوڑائیں، انہیں وقت دیں، خدمت کریں ۔ مہناز رحمن نے اعدادوشمار بتاتے ہوئے کہا کہ آج خواتین سینئر سٹیزن کی شرح 10.1 فیصد ہے جبکہ 2025 میں یہ شرح موجودہ رفتار کے مطابق21 فیصد تک جا پہنچے گی۔ ہمیں اپنے رویے بدلنے ہوں گے ۔

Tags: