بینک جعلی نوٹوں کی منظم گردش میں ملوث نہیں، اسٹیٹ بینک

October 7, 2015 3:43 pm0 commentsViews: 23

مرکزی بینک نے ایسی خبروں کی تردیدکرتے ہوئے بے بنیادقراردیدیا،جعلی نوٹوں کی گردش روکنا قانون نافذکرنیوالے اداروں کا کام ہے
بدقسمتی سے معاملہ میڈیا کے ایک حلقے میں ضرورت سے زیادہ بڑھا چڑھا کر پیش کیاگیا ہے جس سے بینکوں کے ملوث ہونے کا تاثر ابھرا
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) اسٹیٹ بینک نے جعلی نوٹوں کی منظم گردش کی تردید کرتے ہوئے ایسی خبروں کو بے بنیاد قرار دیا اور کہا ہے کہ جعلی نوٹوں کی گردش سے نمٹنا قانون نافذ کرنے والے اداروں کی ذمہ داری ہے۔ اسٹیٹ بینک آف پاکستان کی طرف سے جاری کر دہ بیان کے مطابق گزشتہ دنوں بینک دولت پاکستان کی ایک ٹیم کی طرف سے سینیٹ کی مجلس قائمہ برائے مالیات کو دی گئی بریفنگ میں جعلی زیر گردش نوٹوںکا مسئلہ زیر بحث آیا،بریفنگ کے دوران مجلس قائمہ کے چیئر مین نے اسٹیٹ بینک کی ٹیم سے کہا کہ وہ بعض بینکوں سے عوام کو جعلی نوٹ موصول ہونے کی شکایت کا جائزہ لے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ بد قسمتی سے یہ معاملہ میڈیا کے ایک حلقے میں ضرورت سے زیادہ بڑھا چڑھا کر پیش کیا گیا جس سے یہ تاثر ابھر رہا ہے تھا کہ بینک منظم طور پر جعلی کرنسی کو گردش میںلانے میں ملوث ہیں۔ اسٹیٹ بینک سختی سے ایسی خبروں کی تردید کرتا ہے اور وضاحت کرتا ہے کہ مذکورہ اجلاس میں ظاہر کئے گئے خیالات میڈیا میں غلط طریقے سے پیش کئے گئے ہیں۔ جعلی کرنسیوں کی موجودگی نہ صرف ہمارے ملک بلکہ دنیا بھر میں نا قابل تردید حقیقت ہے۔

Tags: