ودہولڈنگ ٹیکس کا تنازعہ حکومت اور تاجروں میں آج فائنل رائونڈ ہوگا

October 8, 2015 1:50 pm0 commentsViews: 18

بینکوں سے لین دین ختم کرنے سے حکومت کو 157 ارب خسارے کا سامنا کرنا پڑا‘ مسئلے کے حل کیلئے قوی امکانات ہیں
ود ہولڈنگ ٹیکس تنازعہ سے بینکوں کے کاروبار میں 84 فیصد کمی ہوئی‘مذاکرات کی دعوت پر گزشتہ روز ہڑتال مؤخر کی‘ عتیق میر
کراچی( کامرس رپورٹر) آج حکومت سے بینک ٹرانزکشن کے معاملے میں فائنل رائونڈ ہوگا وفاقی وزیر خزانہ، وزیر اعلیٰ پنجاب، چیئر مین ایف بی آر اور ممبران بورڈ آف ریونیو سے آل پاکستان انجمن تاجران کے دونوں گروپ اور دیگر تنظیموں کے حتمی مذاکرات کے بعد ود ہولڈنگ ٹیکس کا مسئلہ حل ہونے کے قوی امکانات ہیں۔ یہ بات آل کراچی اتحاد کے چیئر مین اور آل پاکستان انجمن تاجران کے وائس چیئرمین عتیق میر نے گزشتہ روز نمائندہ آغاز سے گفتگو کرتے ہوئے کہی انہوں نے کہا کہ گزشتہ تین ماہ کے دوران تاجروں کے بینکوں سے لین دین ختم کرنے سے ایف بی آر کو محصولات میں84 فیصد کمی واقع ہوئی جبکہ مقررہ حدف6460 ارب روپے کے حصول کیلئے سرمایہ کاروں کے170ارب روپے کے ریفنڈ روک رکھے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ناقص کارکردگی کے باوجود ایف بی آر نے بوکھلا کر سیلز ٹیکس کی تاخیر سے ادائیگی پر جرمانے کی رقم100 روپے سے بڑھا کر 500 روپے کر دی ہے۔ موجودہ صورتحال سے عہدہ برا ہونے کیلئے وزیر اعلیٰ پنجاب کو جو ٹاسک دیا گیا ہے اس سے وفاقی حکومت وزیر خزانہ کی ود ہولڈنگ کے جبری نفاذ کے فیصلے کی ناکامی کا واضح ثبوت ملتا ہے انہوں بتایا کہ بحیثیت وائس چیئرمین انجمن تاجران، تاجروں کے نمائندہ وفد کے ہمراہ وہ اس معاملے پر حکومتی پینل سے آج حتمی مذاکرات کریں گے۔ گزشتہ روز کی ہڑتال موخر کرنے کا اعلان کیا۔

Tags: