نواز شریف نے اقتدار میں آکر 140ارب روپے کا ڈاکا مارا‘ عمران خان

October 9, 2015 3:54 pm0 commentsViews: 23

چیف الیکشن کمیشن پر اعتماد ہے مگر صوبائی ممبران دھاندلی میں ملوث رہے ہیں‘ انتخابی نتائج دیکھ کر احتجاج کی حکمت عملی کا اعلان کرینگے
عوام سے بجلی کے بلوں میں 70 فیصد اضافی رقم وصول کی جارہی ہے‘ شریف برادران اور ان کی کابینہ کرپٹ اور ظالم ترین ہیں‘ پریس کانفرنس
لاہور( نیوز ایجنسیاں) پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے کہا ہے کہ اپنے بیان پر آج نہیں ہمیشہ قائم رہوں گا کہ شریف برادران اور ان کی کابینہ دنیا کی کرپٹ ترین ہی نہیں ظالم ترین گروہ کی شکل اختیار کر چکی ہے۔ نیلم جہلم پراجیکٹ جو انتہائی اہم تھے کیلئے صرف10 ارب رکھے گئے جو کم ہونے سے روزانہ کی بنیاد پر عوام پر بوجھ بنتا جا رہا ہے جبکہ نیپرا کی لڑائی عوام کے سامنے ہے۔ شریف برادران نے ترقیاتی منصوبوں کے نام پر مال بنایا۔ گارڈن ٹائون پی ٹی آئی سیکریٹریٹ آفس میں ہنگامی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے مزید کہا کہ دنیا کی مہنگی ترین بجلی کے باوجود عوام کو بجلی نہیں مل رہی جبکہ ظلم یہ ہے کہ عوام سے فی بل70 فیصد اضافی رقم وصول کی جا رہی ہے۔ ہنگامی پریس کانفرنس میں ان کے ہمراہ پی ٹی آئی پنجاب کے آرگنائزر چوہدری محمد سرور، ایم پی اے اسلم اقبال سمیت مرکزی قیادت بھی موجود تھی۔ پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے شریف برادران اور ان کی حکومتی کرپشن کے 20 سے زائد اسکینڈلز کا دعویٰ کرتے ہوئے کہا کہ تحریک انصاف اقتدار میں آکر شریف برادران اور آصف زرداری سمیت تمام کرپٹ سیاستدانوں کے ساتھ وہی سلوک کرے گی جو ہم نے خیبر پختونخوا میں اپنے وزیر اور دیگر لوگوں کے ساتھ کرپشن کرنے پر کیا ہے۔ ( ن) لیگ اقتدار میں فیملی بزنس بڑھانے اور پیسہ بنانے کیلئے آتی ہے وزارت اعلیٰ کے عہدے پر کرپشن کی وجہ سے35 ارب روپے کا نقصان پہنچا، نواز شریف نے ایل ڈی اے سے تین ہزار پلاٹس لے کر لوگوں کو بانٹے اور اپنی جماعت کو مضبوط کیا، نندی پور پراجیکٹ22 ارب سے84 ارب تک پہنچ گیا۔ نندی پور پراجیکٹ کا آڈٹ ایشیائی ترقیاتی بینک سے کروایا جائے۔ ہم سے غیر ملکی فنڈز کا حساب مانگنے والے نواز شریف نے اقتدار میں آکر کرپشن کے ذریعے140 ارب روپے کا ڈاکا مارا جن میں بینظیر حکومت گرانے کیلئے اسامہ بن لادن، آئی ایس آئی، مہران بینک سے بھی لئے جانے والی رقوم الگ ہیں۔ نواز شریف پاکستان کے تیسرے امیر ترین شخص ہیں، لیکن ٹیکس دینے والے پہلے دس ہزار لوگوںمیں ان کا نام نہیں آتا ، ن لیگ اقتدار میں عوام کی خدمت نہیں اپنا فیملی بزنس اور پیسہ بڑھانے کیلئے آتی ہے۔ فوج اور رینجرز کی موجودگی کے باوجود ضمنی انتخابات میں ن لیگ کی دھاندلی کا خطرہ موجود ہے۔ چیف الیکشن کمشنر آف پاکستان پر اعتماد ہے صوبائی ممبران پر اعتبار نہیں یہ دھاندلی میں ملوث رہے ہیں۔ انتخابی نتائج دیکھنے کے بعد الیکشن کمیشن کے خلاف احتجاج کی آئندہ کی حکمت عملی کا اعلان کریں گے۔

Tags: