زمینیں غیرمحفوظ ہوگئیں پاکستان میں 50بڑے قبضہ گروپ سرگرم

October 10, 2015 4:30 pm0 commentsViews: 38

کراچی میں زمینوں پر قبضہ کرنیوالوں کو سیاسی سرپرستی حاصل ہے، حکمراں جماعت کے بااثر لوگ قبضہ گروپوں کے سرپرست بنے ہوئے ہیں، غیرملکی جریدہ
پاکستان کے سب سے بڑے شہر میں اربوں روپے کی سرکاری زمینوں پر بھی مافیاز کا قبضہ ہے، سپرہائی وے سے ملحقہ علاقوں میں جعلی کاغذات بنا کر زمینیں فروخت کرنے والوں نے اربوں روپے کمالیے
زمینوں پر قبضے میں پولیس اور اعلیٰ سرکاری افسران بھی ملوث ہیں، رینجرز کی کارروائیوں کے باعث قبضہ گروپس کے لوگوں نے شہر سے فرار ہونا شروع کردیا ہے، رپورٹ میں انکشاف
کراچی( نیٹ نیوز/ مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں زمینوں پر قبضہ کرنا سب سے منافع بخش کاروبار بن گیا ہے۔ ملک بھر میں 50 بڑے قبضے گروپ کام کر رہے ہیں جنہیں سرکاری سرپرستی حاصل ہے۔ جعلی کاغذات پر زمین فروخت کرنے والوں نے اربوں روپے کما لئے۔ غیر ملکی جریدے نے اپنی حالیہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں50 سے زائد بڑے قبضہ گروپ کام کر رہے ہیں ان گروپوں کو با اثر شخصیات، پولیس اور محکمہ مال کی مدد حاصل ہوتی ہے۔ یہ لوگ خالی پلاٹوں پر زیادہ قبضہ کرتے ہیں کیونکہ قانونی طور پر ان پر قبضہ کرنا آسان ہوتا ہے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی زمینوں پر قبضہ زیادہ تر ان کے اپنے رشتے دار کرتے ہیں جریدے کے مطابق صرف اسلام آباد کے50 ہزار کنال سے زائد رقبے پر قبضہ ہو چکا ہے۔ پولیس اور پٹواری مل کر قبضے والی جگہ مارکیٹ ریٹ سے3 گنا کم پر خرید کر عوام کا استحصال کر رہے ہیں۔ جبکہ کراچی میں زمینوں پر قبضہ کرنے والی مافیاز کو حکمران جماعت سمیت ایک سیاسی جماعتوں کی سرپرستی حاصل ہے اربوں روپے کی سرکاری زمینیں بھی جعلی کاغذات بنا کر فروخت کی جا چکی ہیں۔ جریدے نے لکھا ہے کہ کراچی میں قبضہ گروپ کے خلاف رینجرز کی کارروائی کے بعد مافیاز کی با اثر شخصیات بیرون ملک فرار ہونا شروع کر دیا ہے۔ جریدے کے مطابق زمینوں پر قبضہ کرنے میں پولیس اور سرکاری افسران بھی ملوث ہیں جن کے خلاف شواہد جمع کر لئے گئے ہیں۔

Tags: