بجلی کے زائد بلوں پر نیب سے تحقیقات کرائی جائے ،اپوزیشن سینیٹ ارکان

October 10, 2015 5:12 pm0 commentsViews: 14

عوام کو غلط بل بھیجنا حکومت کی نالائقی ہے، وزارت بجلی و پانی میں مالی بد عنوانی کیساتھ انتظامی بدعنوانی بھی ہو رہی ہے
نیپرا کی رپورٹ کو مشترکہ مفادات کی کونسل میں اٹھایا جائے، مشاہد حسین ، سسی پلیجو اور فرحت اللہ بابر کا مطالبہ
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) سینیٹ میں اپوزیشن ارکان نے کہا کہ زائد بجلی بلوں کی نیب سے تحقیقات کرائی جائے‘ سینیٹ نے نیشنل یونیورسٹی آف میڈیکل سائنسز کے قیام کے بل کی اتفاق رائے سے منظوری دے دی۔ ارکان سینیٹ نے دوسرے روز بھی بجلی کے غلط بل بھیجنے پر تحفظات کااظہار کیا‘ مشاہد حسین نے کہا کہ عوام کو غلط بل بھیجنا حکومت کی نا لائقی ہے‘ لوڈشیڈنگ جوں کی توں موجود ہے‘ وزارت پانی و بجلی مین مالی بد عنوانی کے ساتھ انتظامی بد عنوانی بھی ہورہی ہے‘ فرحت اللہ بابر نے کہا کہ نیپرا کی رپورٹ پر نیب سے تحقیقات کرائی جائے‘ سسی پلیجو نے کہا کہ معاملے کو سینیٹ کمیٹی میں بھجوایا جائے اور نیپرا کی رپورٹ کو مشترکہ مفادات کو نسل میں اٹھایا جائے‘ شاہی سید نے کہا کہ پچھلی حکومتوں کے جانے کے بعد الزامات لگتے تھے مگر موجودہ حکومت پر انہی کے دور حکومت میں الزام لگ رہے ہیں‘ رحمن ملک نے کہا کہ لوڈشیڈنگ کے بحران پر حکومت قابو پانے میں ناکام ہوچکی ہے‘ عوام ضرب المثل استعمال کرتے ہیں’’ بجلی کی طرح آئے اور بجلی کی طرح گئے۔

Tags: