صدر سمیت اہم تجارتی علاقوں میں پھر پتھارے لگ گئے ٹریفک شدید متاثر

October 12, 2015 5:05 pm0 commentsViews: 26

ایمپریس مارکیٹ‘ برنس روڈ‘ جامع کلاتھ‘ ایم اے جناح روڈ اور دیگر تجارتی علاقوں سے 2 ماہ قبل پتھارے ہٹائے گئے تھے
تجاوزات کے باعث گاہکوں کو بھی مشکلات‘ ٹھیلے اور پتھارے سیکورٹی نقطہ نظر سے بھی خطرناک ہیں‘ تاجروں کا مؤقف
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ایمپریس مارکیٹ ‘برنس روڈ اور ایم اے جناح روڈ سمیت مختلف تجارتی علاقوں میں سڑک کے کنارے ٹھیلوں اور پتھاروں کی بھر مار سے ٹریفک کی روانی پھر متاثر ہونے لگی‘ تجاوزات کیخلاف آپریشن کے نتیجے میں ہٹائے گئے ٹھیلے اور پتھارے پھر لگ گئے ہیں‘ جس کے نتیجے میںدکانداروں ‘گاہکوں کو نقل و حمل میں پریشانی کا سامنا کرنا پڑرہا ہے۔ جبکہ ٹریفک جام بھی معمول بن گیا ہے‘ تفصیلات کے مطابق اینٹی انکروچمنٹ سیل کی جانب سے صدر ایمپریس مارکیٹ‘ برنس روڈ‘ جامع کلاتھ سمیت ایم اے جناح روڈ اور دیگر تجارتی علاقوں میں تقریباً2 ماہ قبل آپریشن کرکے ٹھیلے‘پتھارے اور کیبنز ہٹادیئے گئے تاہم ٹھیلے‘ پتھارے والوں نے پھر ان علاقوں کا رخ کرلیا ہے اور ایک بار پھر مختلف مارکیٹوں اور اطراف میں سڑک کے کنارے تجاوزات قائم ہوگئی ہیں جس کے نتیجے میں تاجروں کاکہنا ہے کہ گاہکوں کو نقل و حمل میں مشکل پیش آرہی ہے‘ جبکہ ملحقہ سڑکوں پر ٹریفک جام بھی معمول بن گیا ہے‘ تاجر ذرائع کے مطابق محرم کے جلوسوں کے راستے میں آنے والی شاہراہ میں بڑی تعداد میں ٹھیلے‘ پتھارے‘ سیکورٹی نکتہ نگاہ سے بھی خطرناک ہیں اور ممکنہ طور پر محرم سے قبل انہیں ہٹا بھی دیئے گئے تو پھر دوبارہ لگ جائیں گے‘ تاجروں کا کہنا ہے کہ تجاوزات کے خاتمے کیلئے مستقل بنیادوں پر اقدامات کی ضرورت ہے۔ تاجروں کاکہنا ہے کہ ٹھیلے‘ پتھارے اور کیبنز لگانے والے یومیہ2 تا 5 سو روپے بٹورنے والی پولیس و اینٹی انکروچمنٹ اہلکاروں کیخلاف کارروائی ہونی چاہئے۔

Tags: