کراچی فضائی آلودگی میں دنیا کا نمبر ون شہر بن گیا

October 13, 2015 2:15 pm0 commentsViews: 97

رکشے،فیکٹریوں اور کچرا بڑے پیمانے پر جلائے جانے سے نکلنے والا دھواں بڑی وجوہات ہیں
مجموعی آلودگی میں دنیا کے پانچویں بڑے شہر کا درجہ مل گیا، سیوریج لائنوں میں 15 ہزار ٹن یومیہ کچرا ڈالا جاتا ہے، عالمی ادارہ صحت
کراچی( کامرس رپورٹر) اقوام متحدہ کے ادارے ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (WHO) نے کراچی کو فضائی آلودگی میں دنیا کا سر فہرست شہر قرار دے  دیا کراچی میں فضائی آلودگی میں  اضافے کی وجہ رکشوں، فیکٹریوں سے نکلنے والا دھواں اور کچرا بڑے پیمانے پر جلائے جانے سے کراچی کی فضا انتہائی زہر آلود ہوگئی ہے جس سے پھیپھڑوں کے سرطان میں اضافہ ہو رہا ہے۔ عالمی ادارہ صحت کے مطابق کراچی مجموعی آلودگی میں دنیا کا پانچواں غلیظ ترین شہر ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ کراچی میں بہنے والے21 سیوریج نالوں میں یومیہ پندرہ ہزار ٹن کچرا ڈالا جاتا ہے جو2020ء تک 22 ہزار ٹن ہوجائے گا۔ رپورٹ کے مطابق نالوں میں پھینکے جانے والے کچرے میں کاغذ اور گتے کی مقدار 5ٹن  سے زائد ہے جبکہ پلاسٹک بیگ اور پلاسٹک کی بوتلیں بھی2000 ٹن شامل ہیں اس کے علاوہ استعمال شدہ کپڑوں کے ڈھیر صنعتی و انسانی فضلہ وغیرہ شامل ہیں۔ کراچی کی اکثر صاف پانی کی لائنیں سیوریج لائنوں کے قریب سے گزرتی ہیں لائنوں میں بوسیدگی اور رسائو کے باعث سیوریج واٹر کی 61 فیصد مقدار پینے کے پانی میں شامل ہوجاتی ہے جس سے55 فیصد افراد ہیپا ٹائٹس کے مرض میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ شہر میں22 لاکھ افراد پھیپھڑوں کے سرطان اور ہیپا ٹائٹس کے امراض میں مبتلا ہو رہے ہیں۔ اسپتالوں سے نکلنے والا کچرا جس میں ادویات، استعمال شدہ ڈرپس، انجکشن اور دیگر انسٹرومنٹس شامل ہیں کو قاعدے کے مطابق تلف کرنے کے بجائے ان کی فروخت کا وسیع کاروبار جاری ہے۔

Tags: