برطانیہ ، اسکول میں نماز پڑھنے کیلئے جگہ مانگنے پر مسلمان طالب علم دہشت گرد قرار

October 14, 2015 2:46 pm0 commentsViews: 27

برمنگھم میں اسکول انتظامیہ نے مسلمان طالب علم پر نفرت انگیز باتیں اور طالبات کو حجاب پہننے کی تلقین کرنے کے الزامات لگائے
اسکول انتظامیہ سے نماز پڑھنے کیلئے جگہ یا کمرہ دینے کا مطالبہ کیا تھا، مسلمان طالب علم
لندن( نیٹ نیوز) برطانیہ میں ایک مسلمان طالب علم کی جانب سے اسکول میں نماز پڑنے کیلئے جگہ مانگنے پر اسے دہشت گرد قرار دے کر اس کا نام انسداد دہشت گردی پولیس کے حوالے کر دیا گیا۔ برطانوی میڈیا کے مطابق برمنگھم میں ایک کمیونٹی اسکول میں زیر تعلیم مسلمان طالب علم نے انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ اسے نماز پڑھنے کیلئے کوئی کمرہ یا جگہ دی جائے لیکن اسکول انتظامیہ نے فوری طور پر اس کا نام انسداد دہشت گردی فورس کو دیدیا، انتظامیہ نے الزام عائد کیا کہ یہ طالب علم توہین آمیز خاکے شائع کرنے والے بد نام زمانہ کارٹونسٹ چارلی ہیبڈو سے متعلق دیگر طالبات سے نفرت انگیز باتیں کرتا اور طالبات کو بھی حجاب پہننے کیلئے اصرا رکرتا ہے اس لئے پرنسپل نے پولیس کو الرٹ کیا، میڈیا رپورٹ کے مطابق یہ طالب علم ان طالب علموں میں سے ایک ہے جن کا نام نوجوانوں کیلئے کام کرنیوالے حکومتی شدت پسند مخالف پروگرام چینل کو پہلے سے ہی دیدیا گیا ہے۔ ہیڈ منیجر ہیزل پولی کا کہنا ہے کہ جب طالب علم کو نماز کیلئے کمرہ نہیں دیا گیا تو اس کے شدید اصرار نے اساتذہ میں خوف کی لہر دوڑا دی۔

Tags: