سندھ میں ، چائنا کٹنگ کے ذریعے ڈھائی کھرب مالیت کی زمین کی لیز کا انکشاف

October 14, 2015 2:50 pm0 commentsViews: 24

22ہزار ایکڑ میں 12ہزار ایکڑ غیرقانونی لیز ختم کردی، باقی پر کام جاری ہے، ڈپٹی چیئرمین قومی احتساب بیورو
ادارے کو کیس حل کرنے میں مشکلات کا سامنا رہتا ہے،مجرم کو رشوت لے کر چھوڑنے کا تاثر غلط ہے، چیکس تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب
کراچی( نیوز ایجنسیاں) ڈپٹی چیئر مین قومی احتساب بیورو ایڈمرل( ر) سعید احمد سرگانہ نے کہا ہے کہ سندھ میں چائنا کٹنگ کے ذریعے22 ہزار ایکڑ زمین غیر قانونی طور پر لیز کی گئی ہے جس کی مالیت ڈھائی کھرب روپے ہے، اس سلسلے میں نیب کی جانب سے ایک خط سندھ حکومت کو لکھا گیا جس پر کارروائی کرتے ہوئے12 ہزار ایکڑ زمین کی لیز ختم کر دی گئی ہے۔ باقی پر کام جاری ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کو قومی احتساب بیورو کراچی میں چیک تقسیم کے موقع پر خطاب اور میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ ڈپٹی چیئر مین نے کہا کہ ادارے کو کیس حل کرنے میں مشکلات کا سامنا رہتا ہے ماضی کے مقدمات کے ساتھ نئے آنے والے مقدمات کو بھی دیکھنا پڑتا ہے۔ یہ تاثر غلط ہے کہ نیب میں کسی بھی مجرم کو رشوت لے کر چھوڑ دیا جاتا ہے اس موقع پر ڈپٹی چیئر مین قومی احتساب بیورو ایڈ مرل ( ر) سعید احمد سرگانہ نے چار چیک تقسیم کئے جن میں حکومت سندھ کے محکمہ بلدیہ، ورکس اینڈ سروسز، آبپاشی اور محکمہ خوراک کے چار کروڑ دس لاکھ حکومت سندھ کے نمائندے حسن نقوی نے وصول کئے۔ دوسرا چیک گورنر اسٹیٹ بینک کی شکایت پر پنجاب بینک نادہندگان سے3 کروڑ82 لاکھ روپے کے چیک پنجاب بینک کے نمائندے عادل مسعود نے وصول کئے۔ او جی ڈی سی ایل کے6 کروڑ 82 لاکھ روپے عبدالغنی میمن نے وصول کئے جبکہ کو آپریٹو سوسائٹی کے22 لاکھ62ہزار روپے کا چیک انعام اللہ دھاریجو نے وصول کیا۔

Tags: