این اے 122، تحریک انصاف کی دوبارہ گنتی کیلئے درخواست مسترد

October 14, 2015 2:51 pm0 commentsViews: 25

انتخاب اور گنتی کا عمل فوج کی نگرانی میں کرنے کے بعد دوبارہ گنتی کا کوئی جواز نہیں بنتا، ریٹرننگ افسر نے درخواست واپس کردی
مسترد شدہ ووٹ ایاز صادق کے حق میں شمار کیے گئے، عبدالعلیم خان کا موقف، چوہدری سرور نے الیکشن کمیشن سے تصدیق شدہ ووٹر لسٹیں مانگ لیں
لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) این اے122 میں پی ٹی آئی کی دوبارہ گنتی کی درخواست ریٹرننگ آفیسر نے مسترد کرتے ہوئے واپس کر دی۔ تفصیلات کے مطابق لاہور این اے122 کے ضمنی انتخابات میں پی ٹی آئی کے امیدوار علیم خان نے ووٹوں کی دوبارہ گنتی کیلئے درخواست دائر کی تھی جسے ریٹرننگ آفیسر زاہد اقبال نے یہ کہہ کر واپس کر دیا کہ 12 اکتوبر کو نتائج کا اعلان کر دیا تھا۔ پولنگ اسٹیشن پر فوج کی نگرانی میں ری کائونٹنگ کی گئی انتخاب اور گنتی کا عمل فوج کی نگرانی میں کرنے کے بعد دوبارہ گنتی کا کوئی جواز نہیں بنتا، اب درخواست پر کارروائی کا اختیار ہمارے پاس نہیں، مزید کارروائی الیکشن کمیشن ہی کر سکتا ہے۔ قبل ازیں پاکستان تحریک انصاف کے رہنما عبدالعلیم خان نے حلقہ این اے122 کے ضمنی انتخابات میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کرانے کیلئے ریٹرننگ افسران کو درخواست دی ، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ ووٹوں کی گنتی کے دوران مسترد شدہ ووٹ بھی دکھائے جائیں۔ پی ٹی آئی کے امیدوار عبدالعلیم خان نے خدشہ ظاہر کیا ہے کہ مسترد شدہ ووٹ جیتنے والے امیدوار ایاز صادق کے حق میں گنے گئے ہیں۔ اس سے پہلے پی ٹی آئی پنجاب کے آرگنائزر چوہدری محمد سرور نے الیکشن کمیشن کو باضابطہ طور پر خط لکھ کر تصدیق شدہ لسٹیں مانگیں ہیں۔ خط میں کہا گیا ہے کہ 2013ء کے عام انتخابات کے بعد این اے122 میں کتنے ووٹ ختم ہوئے۔ کتنے ٹرانسفر ہوئے۔ تحریک انصاف کی جانب سے خط میں کہا کہ بڑی تعداد میں ووٹ انتخابی فہرستوں سے خارج کرنے اور ٹرانسفر ہونے کی شکایات ملی ہیں ادھر قومی اسمبلی کے حلقہ این اے122 کے ضمنی انتخابات کے نتائج اور ن لیگ کے امیدوار سردار ایاز صادق کی نا اہلی کے لیے الیکشن ٹریبونل میں ایک مرتبہ پھر درخواست دائر کی گئی انتخابی عذر داری اسی حلقہ سے عوامی تحریک کے ناکام امیدوار اشتیاق چوہدری کی جانب سے دائر کی گئی ہے۔

Tags: