کے ایم سی کے محکمے ایچ آر ایم پر تین با اثر افسر ان کا قبضہ تقرری اور تبادلوں کیلئے بھاری نذرانے کی وصولی

October 14, 2015 3:04 pm0 commentsViews: 20

تینوں افسران کے پاس دہرے محکموں کے قلمدان ،دفتر ی امور سست روی کا شکار، ملازمین میں سخت بے چینی
تقرری کے کاغذات میں ردوبدل کرکے کم گریڈ کے افسران کو اعلیٰ عہدوں پر ترقی دینے کا انکشاف، بااثر افسران کیخلاف کارروائی کی اپیل
کراچی(سٹی رپورٹر)کے ایم سی کے محکمے ایچ آرایم میں لوٹ مارکا بازار گرم،ملازمین سے تقرری اور تبادلوں کے ساتھ ساتھ معمولی نوعیت کے کاموں کے عوض بھاری نذرانے وصول کر نے کا سلسلہ زور پکڑ گیا،دیگر اداروں سے کے ایم سی میں تعینات ہونے والے افسران کے گریڈ میں بھاری نذرانوں کے عوض ردوبدل کرنے کا انکشاف محکمہ فائر برگیڈ، محکمہ ٹیکنکل سروسزاور محکمہ وہیکل کے افسران نے محکمہ ایچ آرایم کے انتظامی معاملات اپنے ہاتھ میں لیکر محکمے کے افسران کو عملی طور پر غیر فعال کردیا،بلدیہ عظمیٰ کراچی کے محکمہ ہیومن ریسورس مینجمنٹ میں سابق سنیئر ڈائریکٹر ایچ آر ایم کے وقت میں تعینات کردہ افسران کو واپس اُن کے محکموں میں نہیں بھیجا گیا ذرائع کے مطابق محکمہ ایچ آر ایم میں تعینات محمد ظفر ، مقصود اور عالم نامی تین افسران کے پاس دوہرے محکموں کا بھی چارج ہے جس کے باعث محکمہ ایچ آر ایم کے دفتری امور سست روی کا شکار ہیں واضح رہے سابق ایڈ منسٹریٹر کے ایم سی شعیب صدیقی نے ایک سے زیادہ عہدے رکھنے والے تمام افسران کو فوری طور پران کے اصل محکموں میں بھیجنے کے احکامات دیئے تھے جس کے بعد بلدیہ عظمیٰ کراچی میں افسران کی بڑے پیمانے پر تبادلے اور تقرریاں کی گئیں تاہم دوہرے عہدے رکھنے والے مذکورہ تینوں بااثرافسران سے نہ ہی ایک عہدے کا چارج لیا گیا اور نہ ہی ان افسران کو ان کے اصل محکموں میں بھیجا گیا جس کی وجہ سے نہ صرف بلدیہ عظمیٰ کراچی کے افسران میں بے چینی پھیلی ہوئی ہے بلکہ محکمہ ایچ آر ایم کے دفتری امور بھی شدید متاثر ہورہے ہیں جبکہ محکمہ ایچ آرایم میں تعینات دوسرے محکموں کے افسران کی غیر ذمہ دارانہ رویئے اور عدم دلچسی کے باعث ملازمین کو سخت مشکلات کا سامنا کر نا پر رہا ہے ذرائع کے مطابق مذکورہ تینوں افسران بلدیہ عظمیٰ کراچی کے ملازمین کو ہراساں کرنے کے ساتھ ساتھ مبینہ طور پربھاری نذرانوں کے عوض دوسرے محکموں سے کے ایم سی میں تعینات ہونے والے افسران کی تعینات اور تقرری کے ضروری کاغذات میں ردوبدل کرکے کم گریڈ کے افسران کو اعلیٰ اور بڑے گریڈ میں بھی تعینات کر رہے ہیں بلکہ بلدیہ عظمیٰ کے افسران اور ملازمین سے بھی تبادلوں اور تقرریوں کے مذکورہ تینوں افسران کو محکمہ ایچ آر ایم سے ہٹانے کا مطالبہ کرتے ہوئے تحقیقاتی اداروں سے بلدیہ عظمیٰ کراچی میں گذشتہ 6ماہ میں تعینات ہونے والوںکے ریکارڈکی چھان بین کرنے کی اپیل کی ہے۔

Tags: